62تحصیلوں میں 1122کے مراکزقائم ہوں گے،مومنہ وحید

62تحصیلوں میں 1122کے مراکزقائم ہوں گے،مومنہ وحید

  

لاہور (سٹی رپورٹر) چیئر پرسن سٹیڈنگ کمیٹی فار چیف منسٹر انسپیکشن ٹیم مومنہ وحید نے ایک تحریک التواء کار پنجاب اسمبلی میں جمع کروا دیا ہے جس کے مطابق پنجاب کی 62تحصیلوں میں ریسکیو 1122 کے مراکز قائم ہوں گے اور 27 اضلاع میں بائیک ایمبولینس چلے گی جس کیلئے 5ارب 46کروڑ کے فنڈز مختص کردیئے گئے ہیں۔

، منصوبوں کی بروقت تکمیل کیلئے ٹارگٹ بیسڈ کام کافیصلہ کیاگیاہے۔محکمہ داخلہ سمیت متعلقہ اداروں کو آئندہ مالی سال کے آغاز سے کام شروع کرنے کا عندیہ دے دیا گیا۔ حکومت پنجاب نے آئندہ مالی سال2020-21 کے دوران ترجیحی بنیادوں پر لا اینڈ آرڈر اور حادثاتی سروسز کے ترقیاتی پروگرامز کے لئے فنڈز کے اجرا کی منصوبہ بندی کی ہے۔جس کے تحت آنے والے سال کے دوران کرتار پور راہداری کے مقام پر ریسکیو1122 سٹیشن کے قیام کا منصوبہ شروع کیا جائے گا، جس پر 6 کروڑ روپے خرچ ہوں گے تو دوسری جانب پنجاب کی 62تحصیلوں میں فیز تھری کے تحت ریسکیو1122 کی فراہمی ممکن بنائی جائے گی، اس منصوبے پر 4ارب16کروڑ روپے خرچ ہو ں گے۔ اسی طرح پنجاب کے 27اضلاع میں موٹر بائیک ایمبولینس سروس کی فراہمی کے لئے بھی فنڈز مختص کر دئیے گئے ہیں۔ اس منصوبے پر 1ارب30کروڑ روپے خرچ ہوں گے۔ مالی سال 2020-21کے دوران صوبائی حکومت نے ننکانہ صاحب میں سمارٹ انٹیگریٹڈ کنٹرول سنٹر بنانے کی غرض سے 39کروڑ20لاکھ روپے مختص کر دئیے ہیں۔ منصوبوں کو بروقت پایہ تکمیل تک پہنچانے کی غرض سے صوبائی اداروں اور ضلعی حکام کو ٹارگٹ بیسڈ کام کرنا ہوگا جس کے لئے صوبائی حکومت کی جانب سے باضابطہ طور پرروڈمیپ وضع کیا جائے گا۔#/s#

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -