پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں تاریخی اضافے پر شدید تنقید کے بعد حکومت بھی متحرک ، وزیرتوانائی آج کیا کرنے جارہے ہیں؟ اعلان ہوگیا

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں تاریخی اضافے پر شدید تنقید کے بعد حکومت بھی ...
پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں تاریخی اضافے پر شدید تنقید کے بعد حکومت بھی متحرک ، وزیرتوانائی آج کیا کرنے جارہے ہیں؟ اعلان ہوگیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں تاریخی اضافے پر شدید تنقید کے بعد حکومت بھی متحرک ، وزیرتوانائی کی جانب سے اس صورتحال پر پریس کانفرنس کا اعلان کیاگیاہے۔

حکومت پاکستان کی پاور ڈویژن کے ترجمان ظفر یاب خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کیا ہے کہ "وفاقی وزیر برائے توانائی عمر ایوب خان اور وزیراعظم کے مشیر برائے پیٹرولیم ندیم بابر آج شام پانچ بجے پریس انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کریں گے۔"

وفاقی وزیر کی جانب سےپریس کانفرنس کااعلان ایک ایسے وقت میں کیاگیاہے جب پیٹرولیم مصنوعات میں بھاری اضافے پر عوام الناس میں شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے۔

خیال رہے پاکستان میں وزیر اعظم عمران خان کی منظوری کے بعد پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 25 روپے فی لیٹر تک اضافہ کردیا گیا ہے۔

وزیراعظم کی جانب سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی سمری منظور کیے جانے کے بعد وزارت خزانہ نے پیٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں کا نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے۔

وزارت خزانہ کی جانب سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق پیٹرول 25 روپے 58 پیسے فی لیٹر مہنگا کر دیا گیا ہے جس کے بعد پیٹرول کی نئی قیمت 100روپے 10پیسے فی لیٹر مقرر کی گئی ہے۔

ڈیزل کی قیمت 21 روپے 31 پیسے فی لیٹر اضافے کے بعد 101روپے46پیسے، مٹی کے تیل کی قیمت میں 23روپے 50پیسے فی لیٹر اضافے کے بعد نئی قیمت 59روپے 6 پیسے مقرر کی گئی ہے۔ وزارت خزانہ کے مطابق لائٹ ڈیزل کی قیمت میں 17روپے 84پیسے فی لیٹراضافہ کیا گیا ہے اور اس کی نئی قیمت 55روپے 98 پیسے مقرر ی گئی ہے۔

واضح رہے کہ عام طور پر پٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں کا نفاذ ہر ماہ کی پہلی تاریخ سے ہوتا ہے تاہم اس مرتبہ نئی قیمتوں کا اطلاق 27 جون رات 12 بجے سے ہی ہو گیا ہے۔

مزید :

قومی -بزنس -