چین اور نیپال کے بعد بھوٹان نے بھی بھارت کو آنکھیں دکھانا شروع کردی

چین اور نیپال کے بعد بھوٹان نے بھی بھارت کو آنکھیں دکھانا شروع کردی
چین اور نیپال کے بعد بھوٹان نے بھی بھارت کو آنکھیں دکھانا شروع کردی

  

نئی دہلی (ویب ڈیسک )پڑوسی ممالک چین اور نیپال کے ساتھ بڑھتے تنازعات اور سرحدی کشیدگی کے درمیان اب بھارت کا ایک اور پڑوسی ملک بھوٹان بھی نئی دہلی کو آنکھیں دکھانے لگا ہے۔بھوٹان نے اپنی سرحد سے ملحق بھارت کی شمال مشرقی ریاست آسام کے گاﺅں میں کسانوں کے لیے شہ رگ کہی جانے والی کالا ندی کا پانی روک دیا ہے۔

یہ نئی پیش رفت ایسے وقت ہوئی ہے جب بھارت چین اورنیپال کے ساتھ سرحدی تنازع کی وجہ سے پہلے ہی پریشانیوں سے دوچار ہے اور اس مسئلے کو حل کرنے کے لیے مختلف سطحوں پر کوششیں جاری ہیں۔

بھوٹان کا کہنا ہے کہ یہ فیصلہ کووڈ 19 کی وبا کے مدنظر کیا گیا ہے۔ چونکہ بھوٹان میں کسی بھی غیر ملکی شہری کو آنے کی اجازت نہیں ہے اسی لیے بھارتی کسانوں کو بھی ملک کے اندر داخل ہونے نہیں دیا گیا۔مقامی بھارتی کسانوں کا کہنا ہے کہ کورونا اور نہر کا پانی دو الگ الگ معاملات ہیں اور کورونا کے بہانے پانی روکنے کا فیصلہ درست نہیں ہے۔ اس سے مقامی کسانوں کے لیے بہت مشکل پیدا ہوجائے گی۔

مزید :

بین الاقوامی -