کبھی کبھار مزاحیہ بات نہ بھی ہو تو ہنسی آجاتی ہے ؟ماہرین نے وجہ بتادی

کبھی کبھار مزاحیہ بات نہ بھی ہو تو ہنسی آجاتی ہے ؟ماہرین نے وجہ بتادی
کبھی کبھار مزاحیہ بات نہ بھی ہو تو ہنسی آجاتی ہے ؟ماہرین نے وجہ بتادی

  


نیویارک(نیوزڈیسک)بعض اوقات ہنسی والی بات نہ بھی ہو تو ہمیں ہنسی آجاتی ہے۔ایسا کیوں ہوتا ہے اور ہم بلاوجہ کیوں ہنس پڑتے ہیں؟اس بات کا جواب ماہرین نے دے دیا ہے۔ان کا کہنا ہے کہ ہنسی کی ایک وجہ مذاق ہوتا ہے لیکن جن لوگوں کے ساتھ ہمیں ذہنی قربت ہوتی ہے یا جن کے ساتھ مضبوط رشتہ موجود ہو کے ساتھ ہمیں بلا وجہ ہنسی آجاتی ہے اور یہ اس بات کی غماز ہے کہ ہم اس سے اپنا رشتہ مزید بہتر بنانا چاہتے ہیں۔حال ہی میں کی گئی ایک ماہر اعصاب سوفی سکاٹ کی جانب سے نمیبیا اور انگلش لوگوں پر تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ہنسی اصل میں ایک معاشرتی گرہ ہے جس سے لوگ ایک دوسرے کے قریب آجاتے ہیں۔

بھارتی جوڑے کو موٹر سائیکل شرمناک سفر بے حد مہنگا پڑا،فیس بک نے پھنسا دیا

سکاٹ کا کہنا ہے کہ بظاہر لوگ سمجھتے ہیں کہ انہیں ہنسی آرہی ہے لیکن حقیقت میں وہ دوسرے افراد سے مضبوط رشتے کے خواہاں ہوتے ہیںیا موجودہ تعلق کو مضبوط بنانا چاہتے ہیں۔ماہرین نے بناوٹی اور اصل ہنسی کو دیکھنے کے لئے دو گروہوں کا سکین بھی کیااوریہ بات سامنے آئی کہ بلاوجہ ہنسی کی وجہ سے دماغ تیزی اور بہتری سے کام کرتا ہے لیکن اصل ہنسی کے دوران صرف کان کے اندر کے اعضاءکی بہتر کارکردگی دیکھی گئی۔ان تمام باتوں کو مدنظر رکھتے ہوئے ماہرین کا کہنا ہے کہ بلاوجہ ہنسنا صحت کے لئے اچھا ہوتا ہے ۔ایک اور تحقیق میں امریکی تعلیمی ادارے انڈیانا سٹیٹ یونویرسٹی کا کہنا ہے کہ ہنسنے کی وجہ سے ہمارے جسم کے مدافعتی نظام میں 40فیصد تک بہتری آتی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...