لاہور ہائی کورٹ ، تاوان لینے کے بعد مغوی کو قتل کرنے کے 6مجرموں کی اپیلیں خارج ،سزائے موت برقرار

لاہور ہائی کورٹ ، تاوان لینے کے بعد مغوی کو قتل کرنے کے 6مجرموں کی اپیلیں خارج ...
لاہور ہائی کورٹ ، تاوان لینے کے بعد مغوی کو قتل کرنے کے 6مجرموں کی اپیلیں خارج ،سزائے موت برقرار

  


لاہور (نامہ نگار خصوصی ) لاہور ہائیکورٹ نے اغوار برائے تاوان اور قتل کے 6 قیدیوں کی سزائے موت کے خلاف اپیلیںخارج کر تے ہوئے انسدادہشت گردی کورٹ کی طرف سے مجرموں کو پھانسی دینے کے فیصلے کو برقراررکھا۔ سزائے موت کے قیدیوں شاہد حسن ، حسن نذیر ، ملک شاہد ، بلال احمد ، کامران ، اوربلال کوانسداد دہشت گردی کی عدالت نے ٹاو ¿ن شپ میں ارشد رشید کوتاوان کے لئے اغواءکرکے اسے قتل کرنے کے جرم میں سزائے موت کا حکم سنایا تھا جس کے خلاف انہوں نے یہ اپیلیں دائر کی تھیں۔اپیل کنندگان کے وکلاءنے موقف اختیار کیا کہ ان کے موکل اغواءبرائے تاوان کی ایف آئی آر میں نامزد نہیں تھے ۔وکلاءصفائی کا کہناتھا کہ مجرمان اغوا اور قتل کی واردات میں ملوث نہیں،ناکافی شواہد کے باوجود انسداددہشت گردی کورٹ نے انہیں موت کی سزا سنائی۔ ڈپٹی پراسیکیوٹرجنرل پنجاب نے کہا کہ مجرموں سے ارشد رشید کی لاش اورتاوان کی وصول کی گئی رقم کی برآمدہوئی تھی ۔ان کی جیل میں شناخت پریڈ بھی کروائی گئی تھی۔ شناخت پریڈ ، پولیس تفتیش اورچشم دید گواہوں کے بیانات میں یہ لوگ قصوروارہیں۔ عدالت نے دلائل سننے کے بعد مجرموں کی بریت کے لئے دائر اپیلیں خارج کر دیں ، مجرموں نے 2010میں ارشد رشید کو اغوا کر کے 6 کروڑ تاوان وصول کرنے کے باوجود اسے قتل کر دیا تھا۔

مزید : لاہور


loading...