10ماہ کا حاملہ بچہ، ڈاکٹروں کو بھی چکرا کر رکھ دیا

10ماہ کا حاملہ بچہ، ڈاکٹروں کو بھی چکرا کر رکھ دیا
10ماہ کا حاملہ بچہ، ڈاکٹروں کو بھی چکرا کر رکھ دیا

  

جکارتہ (نیوز ڈیسک) انڈونیشیا میں ایک ننھے بچے کے والدین کئی ماہ سے سمجھ رہے تھے کہ ان کے بیٹے کے پیٹ میں رسولی ہے جس کی وجہ سے اس کا پیٹ تیزی سے بڑھ رہا تھا، لیکن جب اس کا معائنہ کروانے کے لئے ہسپتال گئے تو انتہائی خوفزدہ کردینے والا انکشاف ہوگیا۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ڈاکٹروں نے انکشاف کیا ہے کہ 10 ماہ کے محمد عبداللہ ذکری حکیم کے پیٹ میں اس کا اپنا جڑواں بھائی پرورش پارہا ہے، جس کی وجہ سے اس کے پیٹ کی جسامت غیر معمولی طور پر بڑھ گئی ہے۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ اگرچہ ایسی صورتحال بہت کم دیکھنے میں آتی ہے لیکن ”فیٹس ان فیٹس“ کہلانے والا یہ مسئلہ اس سے پہلے بھی دیکھنے میں آچکا ہے۔ یہ افسوسناک کیفیت اس وقت پیدا ہوتی ہے جب دو جڑواں بچے علیحدہ علیحدہ پرورش نہیں پاتے بلکہ ایک بچہ دوسرے کے جسم کے اندر رہ جاتا ہے اور ایسی صورت میںدونوں کی جان کو خطرہ لاحق ہوتا ہے۔

’جیسے ہی میں ماں بنی تو اس مشکل میں پھنس گئی جس کا پہلے کبھی نہ سوچا تھا کہ۔۔۔‘ 72 سال کی عمر میں ماں بننے والی خاتون نے ایسی بات کہہ دی کہ جان کر آپ بھی حیران پریشان رہ جائیں گے

ننھے محمد عبداللہ کے پیٹ میں موجود اس کا جڑواں بھائی اسی کے جسم سے خوراک لے رہا ہے جس کی وجہ سے وہ خوراک کی شدید کمی کا شکار ہو چکا ہے۔ اس کا جسم بہت کمزور ہونے کی وجہ سے ڈاکٹروں نے فیصلہ کیا ہے کہ فوری طور پر اس کا آپریشن ممکن نہیں ہوگا۔ بچے کا علاج معالجہ شروع کردیا گیا ہے اور خصوصاً اس کے جسم کو طاقت فراہم کرنے والی غذائیں اور ادویات دی جارہی ہیں تاکہ آپریشن کرکے اس کے جڑواں بھائی کو اس کے پیٹ سے نکالا جاسکے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -