آئی جی جیلوں سے قیدیوں کو لانے والے اہلکاروں کی کرپشن پر برہم

آئی جی جیلوں سے قیدیوں کو لانے والے اہلکاروں کی کرپشن پر برہم

  

لاہور(خبر نگار ) ڈی آئی جی آپریشن ڈاکٹرحیدر اشرف نے ایک خفیہ رپورٹ پر جوڈیشل پولیس کی نفری پر تعینات اہلکاروں کے خلاف ملنے والی شکایت پر سخت نوٹس لے لیا ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ ڈی آئی جی کو ایک خط کے ذریعے اطلاع ملی ہے کہ جیلوں سے عدالت میں پیشی کے لیے آنے والے نیب سمیت دیگر مقدمات میں ملوث قیدیوں و حوالاتیوں سے پولیس لائن میں تعینات جوڈیشل عملہ مبینہ طور پر کرپشن میں ملوث ہے اور قیدیوں کو پروٹوکول دینے ، کھانے پینے کی اشیاء فراہم کرنے، موبائل فون سمیت دیگر سہولیات دینے کے عوض رشوت پر لگے ہوئے ہیں۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ ڈی آئی جی نے جوڈیشل اہلکاروں کے خلاف قیدیوں وحوالاتیوں عدالت میں پیشی کے موقع پرمبینہ مک مکا کی رپورٹ طلب کر لی ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ خط میں بتایا گیا ہے کہ جوڈیشل اہلکار روزانہ کی بنیاد پر بھاری رشوت وصول کررہے ہیں ، پیسے نہ دینے والے قیدیوں وحوالاتیوں کے ورثاء کے سامنے تنگ کیا جاتا ہے اور انہیں ملاقات کے بغیر ہی فوری طور پر گاڑی میں بند کرکے جیل بجھوا دیا جاتا ہے۔ متعدد متاثرہ افراد کی جانب سے بھجوائے گئے خط میں اہلکاروں کے نام بھی ظاہر کئے گئے ہیں۔ جس پر ڈی آئی جی نے ایس پی ہیڈ کوارٹر سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔

مزید :

علاقائی -