پانامہ کیس کے فیصلے میں عوام کی جیت ، کرپشن کی ہار ہوگی ؛سراج الحق

پانامہ کیس کے فیصلے میں عوام کی جیت ، کرپشن کی ہار ہوگی ؛سراج الحق

  

اسلام آباد (آن لائن) جماعت اسلامی کے امیر سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے ملک میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں ،وزیر اعظم نے ہمیشہ اپنے ذاتی مفادات کو قومی مفادات پر ترجیح دی ہے ناقص معاشی پالیسیوں کی وجہ سے مہنگائی کا طوفان پیدا ہو گیا ہے غیر ملکی قرضوں کی شرح اتنی بلند ہو چکی ہے کہ آنیوالی نسلیں بھی اس کا بوجھ برداشت نہیں کر پائیں گی ۔ پانامہ کیس کے فیصلے میں عوام کی جیت اور کرپشن کی ہار ہو گی،اگلے انتخابات میں کسی بھی کرپٹ طبقے یا سیاسی جماعت کیساتھ انتخابی اتحاد نہیں کرینگے ۔گزشتہ روز ایک انٹرویو میں انکا کہنا تھا حکمرانوں کے قول و فعل میں شدید تضاد ہے ، نیشنل ایکشن پلان کو نافذ ہوئے تین سال ہو چکے مگر ابھی تک اس پر مکمل عملدرآمد نہیں کیا گیا ۔ حکومت ملک میں امن و امان قائم کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے حکمرانوں کو صرف اپنی آسائش کی فکر ہے غریب عوام کا پیسہ حکمرانوں کی شاہ خرچیوں کی نذر ہو رہا ہے ۔ حکومت کی خارجہ پالیسی ناکام ہو چکی ،ہمارا پڑوسی ملک افغانستان انہی غلط پالیسیوں کی وجہ سے پاکستان کا دشمن بن چکا ہے اور سرحدوں پر بسنے والے ہزاروں افراد کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ ریاست عوام کے جان و مال کے تحفظ ، تعلیم ، صحت اور روزگار فراہم کرنیکی ذمہ دار ہے مگر صورتحال اس کے برعکس ہے ،عوام مہنگائی کے بوجھ تلے دبے ، علاج و معالجہ کی سہولیات میسر نہیں اور غریب روٹی کو ترس رہا ہے ۔ اسوقت پوری قوم کی نظریں پانامہ کیس پرلگی ہوئی ہیں، عدالت عظمیٰ نے خود کہا ہے ہم ایسا فیصلہ دیں گے جسے عوام بھلا نہیں سکیں گے ۔ ہمیں عدالتوں پر مکمل اعتماد ہے اور خواہش ہے عوام کی جیت اور کرپشن کی ہار ہو ۔ آپرپشن ضرب عضب کی کامیابی کے بعد اداروں کی کمزوری کی وجہ سے دہشتگردی کے واقعات دوبارہ شروع ہو گئے ہیں جس کی وجہ سے فوج کو مجبوراً دوبارہ آپریشن ردالفساد شروع کرنا پڑا جسکی مکمل حمایت کرتے ہیں ۔ بھارت امریکہ گٹھ جوڑ صرف پاکستان کیخلاف ہے اور ہمارے بزدل حکمران امریکہ کے آگے جھکے ہوئے ہیں ۔اگلے انتخابات میں کسی بھی کرپٹ طبقے یا سیاسی جماعت کیساتھ انتخابی اتحاد نہیں کرینگے ۔

سراج الحق

مزید :

علاقائی -