اقتصادی راہداری پر کام کرنیوالے چینی ٹھیکیدار کو 1 کروڑ کا جھٹکا دیدیا

اقتصادی راہداری پر کام کرنیوالے چینی ٹھیکیدار کو 1 کروڑ کا جھٹکا دیدیا

رحیم یارخان(بیورورپورٹ)ملتان سے سکھر اقتصادی راہداری پر کام کرنے والے چائینز ٹھیکیدار کو میاں بیوی نے ایک کروڑ روپے کا ٹیکہ لگا دیا بیرون ملک فرارہونے کا شبہ پولیستھانہ ظاہر پیر نے چائینز ٹھیکیدار کی مدعیت میں فراڈ میں ملوث میاں بیوی کے خلاف مقدمہ درج کرلیا تفصیل کے مطابق والٹن روڈ لاہور کے رہائشی چائینز شہری مسٹر لین زہونگ کنگ المعروف فرینک نے پولیس کو دی جانے والی(بقیہ نمبر29صفحہ12پر )

اپنی شکایت میں بیان کیا کہ وہ عرصہ11سال سے پاکستان میں رہائش پذیر ہے اور قائد اعظم سولر پینل بہاولپور ، اورنج لائن منصوبہ& لاہور اور ڈی ایچ اے فیز 8 میں بطور ٹھیکیدار کام کرچکا ہے اور اب ملتان سے سکھر تک تعمیر کی جانے والی اقتصادی راہداری میں بھی بطور ٹھیکیدار کام کر رہا ہے سیالکوٹ سے تعلق رکھنے والا ملزم شوکت غنی اور اس کی اہلیہ ارم شوکت کچھ عرصہ اس کے ساتھ بطور پارٹنر کام کرتے رہے ہیں اسی دوران ملزم شوکت غنی اور اس کی اہلیہ ارم شوکت نے اس سے ایک کروڑ روپے کی رقم ضرورت کے تحت امانتاً حاصل کرلی اسی دوران اسے یہ بھی معلوم ہوا کہ ملزم شوکت غنی ملتان سے سکھر اقتصادی راہداری پر کام کرنے والے مزدوروں اور ہیوی مشینری مالکان کو بھی رقم کی ادائیگی نہ کرتا رہا ہے جبکہ وہ مزدوروں اور ہیوی مشینری مالکان کی رقوم بھی ملزم شوکت غنی کو ادا کرتا رہا ہے" چند روز قبل ملزم شوکت غنی اپنی بیوی سمیت فر ارہوگیا اور فون پر رابطہ کرنے پر واپس آنے کی تاریخیں دینے کا ڈرامہ رچاتا رہا اسے شبہ ہے کہ ملزم شوکت غنی اور اس کی اہلیہ ارم شوکت بیرون ملک فرارہونے والے ہیں جبکہ ہیوی مشینری مالکان اور مزدور رقوم کی ادائیگی کیلئے اس پر دباؤ ڈال رہے ہیں دونوں ملزمان سے اس سے ایک کروڑ روپے کی رقم کا بھی فراڈ کیا ہے جو اب رقم ادا کرنے سے انکاری ہیں پولیس نے چائینز ٹھیکیدار مسٹر لین زہونگ کنگ المعروف فرینک کی رپورٹ پر سیالکوٹ سے تعلق رکھنے والے میاں بیوی کے خلاف مقدمہ درج کرکے تلاش شروع کردیں ہے۔واضح رہے کہ ضلع رحیم یارخان میں اقتصادی راہداری منصوبہ پر کام کرنے والے کسی بھی چائینز شہری کی جانب سے پہلی مرتبہ مقدمہ کا اندراج کروایا گیا ہے۔

جھٹکا

مزید : ملتان صفحہ آخر