پاکستانی اب بھی مجھ سے پیار کرتے ہیں مگر حکومت کا رویہ اشتعال انگیز تھا: عدنان سمیع

پاکستانی اب بھی مجھ سے پیار کرتے ہیں مگر حکومت کا رویہ اشتعال انگیز تھا: ...
پاکستانی اب بھی مجھ سے پیار کرتے ہیں مگر حکومت کا رویہ اشتعال انگیز تھا: عدنان سمیع

  


لندن (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستانی نژاد بھارتی گلوکار عدنان سمیع نے کہا ہے کہ وہ 18 سال سے بھارت میں رہائش پذیر ہیں اور بہت ہی پرسکون محسوس کرتے ہیں۔ پاکستان کے لوگ اب بھی مجھ سے پیار کرتے ہیں لیکن حکومت کا رویہ کافی اشتعال انگیز تھا۔

سیالکوٹ میں رکشہ چلانے پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ

گلوکار عدنان سمیع کو اپنی موسیقی کے باعث بھارت اور پاکستان میں مقبولیت حاصل ہوئی لیکن بھارتی پاسپورٹ حاصل کرنے کے بعد انہیں پاکستان میں شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا۔

انہوں نے کچھ روز قبل لندن کے ویمبلے ایرینا میں اپنے فن کا مظاہرہ کیا جہاں لندن کے میئر صادق خان سمیت شائقین کی بڑی تعداد شریک ہوئی۔ بعد ازاں انہوں نے غیر ملکی خبر رساں ادارے بی بی سی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وہ بھارت میں گزشتہ 18 سال سے رہ رہے ہیں اور بہت ہی پرسکون محسوس کرتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ”بھارت کے لوگ مجھے بہت پیار کرتے ہیں۔ ایک فنکار کی حیثیت سے میرا کام پوری دنیا میں پھیلتا ہے اور لوگ اسے بہت پسند کرتے ہیں ۔“

بھارتی شہریت حاصل کرنے اور اس پر ہونے والی تنقید سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ”بھارتی شہریت حاصل کرنا میرا ذاتی فیصلہ تھا اور میں اس پر ہونے والی تنقید سے متفق نہیں ہوں۔ یہ میرا حق ہے کہ میں جہاں مرضی رہوں اور میں ایسی جگہ رہنا پسند کروں گا جہاں میرے ٹیلنٹ میں مزید اضافہ ہو۔“

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

انہوں نے کہا کہ ”میں نے اپنے پاسپورٹ کی تجدید کیلئے ایک درخواست دی تھی لیکن مجھے اس پر کوئی جواب نہیں ملا۔ جب میں نے معاملے کی چھان بین کی تو مجھے بتایا گیا کہ یہاں پاسپورٹ کی تجدید نہیں کی جائے گی۔ جب میں نے بھارتی وزارت داخلہ سے رابطہ کیا تو پتہ چلا کہ میں بے وطن ہو چکا ہوں۔ تاہم وزارت داخلہ نے مجھے شہریت دیدی۔“

ان کا مزید کہنا تھا کہ ”لوگ فوراً نتیجہ نکال لیتے ہیں پورے معاملے کو نہیں سمجھتے۔ پاکستان کے لوگ اب بھی مجھ سے پیار کرتے ہیں لیکن حکومت کا رویہ اشتعال انگیز تھا۔“

مزید : تفریح