’امریکہ دنیا میں یہ خطرناک ترین جان لیوا بیماری جان بوجھ کر پھیلارہا ہے‘ بڑے ملک نے امریکہ پر اب تک کا سب سے سنگین ترین الزام لگادیا

’امریکہ دنیا میں یہ خطرناک ترین جان لیوا بیماری جان بوجھ کر پھیلارہا ہے‘ ...
’امریکہ دنیا میں یہ خطرناک ترین جان لیوا بیماری جان بوجھ کر پھیلارہا ہے‘ بڑے ملک نے امریکہ پر اب تک کا سب سے سنگین ترین الزام لگادیا

  

پیانگ یانگ (نیوز ڈیسک) براعظم افریقہ میں ایبولاوائرس کی وباءپھوٹنے سے ہزاروں افراد لقمہ اجل بن گئے اور دنیا بھر کے سائنسدانوں نے اس وائرس کے پھیلاﺅ کے متعلق تحقیقات شروع کردیں۔ ایک ایسی ہی تحقیق شمالی کوریا میں جاری تھی جس کے مکمل ہونے پر تہلکہ خیز دعویٰ کیاگیا ہے کہ ایبولاوائرس امریکہ نے پھیلایا اور براعظم افریقہ کے کئی ممالک کو اس وائرس کی ٹیسٹنگ کے لئے تجربہ گاہ کے طور پر استعمال کیا گیا۔

دی انڈیپینڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق اس تباہ کن وائرس کا پھیلاﺅ امریکہ کے حیاتیاتی ہتھیاروں کے تجربات کا حصہ تھا۔ کورین سنٹرل نیوز ایجنسی کی ایک رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ امریکہ کے سابق صدر رونلڈ ریگن کے ایک سابقہ قریبی ساتھی نے شمالی کوریائی حکام کو بتایا ہے کہ ایبولاوائرس کو ابتدائی شکل میں امریکی سائنسدانوں نے تیار کیا اور اسے بڑے پیمانے پر حیاتیاتی ہتھیار کے طور پر استعمال کرنے کے لئے تیار کیا گیا تھا۔

’اس ملک پر امریکہ مسلسل اتنے بم گرا رہا ہے کہ ہم گنتی بھی بھول گئے ہیں‘ عالمی ادارے نے ایسا اعلان کردیا کہ سن کر ہر مسلمان کا دل خون کے آنسو روئے گا

شمالی کوریائی حکام کی جانب سے اطلاع فراہم کرنے والی امریکی شخصیت کا نام رابرٹس بتایا گیا ہے اور واشنگٹن پوسٹ کا کہنا ہے کہ غالباً ان کا اشارہ صدر ریگن کے سابقہ قریبی ساتھی پال کریگ رابرٹس کی جانب ہے ، جو کہ ایک نامور معیشت دان ہیں۔ رابرٹس کی جانب سے حال ہی میں ایک بلاگ پوسٹ ”Is The US Government the master Criminl of our time?“ بھی شائع کی گئی ہے جس میں انہوں نے ایبولاوائرس پر تحقیق کرنے والے دو سائنسدانوں کی تحقیقات کا بھی حوالہ دیا۔

شمالی کوریائی حکام کا کہنا ہے کہ امریکہ نے ایک فارماسوٹیکل کمپنی کو 14 کروڑ ڈالر (تقریباً 14 ارب پاکستانی روپے) دئیے تاکہ ایبولاوائرس پر مزید تحقیقات کی جاسکیں اور اسے افریقہ میں ایک تجرباتی حیاتیاتی ہتھیار کے طور پر استعمال کیا۔ رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ روس، سنگاپور اور امریکی اخبارات میں یہ اطلاعات سامنے آچکی ہیں کہ امریکہ نے ایبولاوائرس کے لئے ویکسین بھی تیار کرکھی ہے لیکن دنیا سے اسے خفیہ رکھا ہے۔ رپورٹ میں ایڈز کے وائرس کی تیاری اور دنیا بھر میں اس کے پھیلاﺅ کا ذمہ دار بھی امریکہ کو قرار دیا گیا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -