انتہا پسندی ،دہشت گردی ،اور فرقہ وارانہ تشدد کے خلاف جدو جہد جاری،پیغام اسلام کانفرنس قومی بیانئے کا عملی تصور پیش کرے گی:طاہر محمود اشرفی

انتہا پسندی ،دہشت گردی ،اور فرقہ وارانہ تشدد کے خلاف جدو جہد جاری،پیغام ...
انتہا پسندی ،دہشت گردی ،اور فرقہ وارانہ تشدد کے خلاف جدو جہد جاری،پیغام اسلام کانفرنس قومی بیانئے کا عملی تصور پیش کرے گی:طاہر محمود اشرفی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان علما کونسل کے چیئر مین علامہ طاہر محمود اشرفی نے کہا ہے کہ انتہا پسندی ،دہشت گردی ،اور فرقہ وارانہ تشدد کے خلاف پاکستان علما کونسل کی جدو جہد جاری رہے گی ،12اپریل کو کنونشن سینٹر اسلام آباد میں منعقد ہونے والی دوسری سالانہ ’’پیغام اسلام کانفرنس ‘‘کی تیاریاں جاری ہیں ،اندرون و بیرون ملک سے عالم اسلام کی جید اور ممتاز شخصیات،سیاسی و مذہبی قائدین اور اسلامی ممالک کے سفیروں کی بڑی تعداد اس کانفرنس میں شریک ہو کر پاکستانی سرزمین سے اسلام کے پیغام امن کی توانا اور مضبوط آواز کو دنیا کے سامنے رکھیں گے ۔

جامعہ مسجد معاز ابن جبلؓ میں مولانا عبد الحمید صابری ،مولانا نعمان حاشر مولانا طاہر عقیل ،مولانا قاری ممتاز احمد ،مولانا عبد الصبور ،مولانا حفیظ الرحمن بالا کوٹی اور مولانا شہزاد احمد کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے علامہ طاہر محمود اشرفی کا کہنا تھا کہ پاکستان علماء کونسل نے توہین ناموس رسالتﷺ کے حل کے لئے آئی ٹی ماہرین سے رابطے کا فیصلہ کیا ہے ،وزیر داخلہ کا اسلامی ممالک کے سفیروں سے رابطے کا اقدام درست مگر اس حساس ترین ایشو کو مستقل بنیادوں پر حل کرنے اورسوشل میڈیا سے توہین آمیز مواد ہٹانے کے لئے عملی اقدامات کئے جائیں ،فیس بک ،ٹوئٹر،یوٹیوب اور دیگر سوشل میڈیا سائٹس کے مالکان اور ذمہ داران سے رابطہ کر کے اس حساس ترین مسئلہ کو ہمیشہ کے لئے حل کرنے کے لئے ٹھوس اقدامات وقت کی ضرورت ہے اور حکومت کی جانب سے کسی قسم کی کوتاہی ،غفلت اور لاپرواہی کی کوئی گنجائش نہیں ۔انہوں نے کہا کہ 12اپریل کو کنونشن سینٹر اسلام آباد میں منعقدہ دوسری ’’عالمی پیغام اسلام کانفرنس ‘‘کی تیاریاں پورے زور و شور سے جاری ہیں ،پاکستان علماء کونسل کی یہ عالمی کانفرنس ،فرقہ وارانہ تشدد ،دہشت گردی ، انتہا پسندی اور شدت پسندی کے خاتمے اور فکری اتحاد کے لئے اہم اور کلیدی کردار ادا کرے گی ۔علامہ طاہر محمود اشرفی نے کہا کہ قومی ،سیاسی و مذہبی قیادت کو آپریشن ردُ الفساد کی مکمل تائید و حمایت کرنا ہو گی ،قومی بیانیہ کے سلسلہ میں مشیر قومی سلامتی جنرل(ر) ناصر جنجوعہ کے ساتھ علما اور مذہبی قیادت کے رابطے موجود ہیں ،جبکہ پاکستان علماء کونسل ’’پیغام اسلام کانفرنس ‘‘ میں اسی قومی بیانیہ کا عملی تصور پیش کرے گی ،اس سلسلہ میں 6اپریل کو الفتح مسجد اسلام آباد میں اہم اجلاس ہو گا جس میں قومی بیانیہ کو حتمی شکل دی جائے گی ۔

انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ حکومت کو فوری طور پر آئی ایس آئی ،ایف آئی اے اور وزارت داخلہ کے تحت ایک کمیٹی قائم  اور ایسا قانون وضع کرنا چاہئے جس سے تمام ملکی ادارے سائبر کرائم کی روک تھام کے لئے اپنا کردار ادا کر سکیں ۔حافظ طاہر محمود اشرفی نے کہا کہ جنرل (ر)راحیل شریف کا عالمی اسلامی عسکری اتحاد کی فوج کا سربراہ بن کر جانا پاکستان کے لئے ایک بڑے اعزاز کی بات اور عالم اسلام کے لئے ایک بہترین قدم ہے ،پاکستان علماء کونسل اس کی مکمل تائید و حمایت کرتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ عالمی اسلامی عسکری اتحاد فرقہ وارانہ بنیادوں پر نہیں بلکہ مسلم امہ کو دہشت گردی اور انتہا پسندی سے بچانے کے لئے قائم کیا گیا ہے ،اس کی مخالفت دہشت گردوں اور انتہا پسندوں کو تقویت دینے کے مترادف ہے۔

مزید :

اسلام آباد -