80 سالہ جوڑے نے شادی کے 40 سال بعد بالآخر وہ کام کردیا جو آج کل نوجوان جوڑے شادی کی رات ہی کرلیتے ہیں، تصاویر جاری کردیں

80 سالہ جوڑے نے شادی کے 40 سال بعد بالآخر وہ کام کردیا جو آج کل نوجوان جوڑے شادی ...
80 سالہ جوڑے نے شادی کے 40 سال بعد بالآخر وہ کام کردیا جو آج کل نوجوان جوڑے شادی کی رات ہی کرلیتے ہیں، تصاویر جاری کردیں

  

بیجنگ (نیوز ڈیسک) چین کے صوبے شان شی سے تعلق رکھنے والے شانگ بینفو اور ییاﺅ شو فانگ کی شادی تو 40 سال پہلے ہی ہوگئی تھی مگر شادی کی تقریب کا اہم حصہ سمجھا جانے والا ایک کام رہ گیا، جو انہوں نے اب بالآخر چار دہائیوں بعد کر ہی لیا ہے۔

دی میٹرو کی رپورٹ کے مطابق شانگ بینفو کی عمر 84 سال اور ان کی اہلیہ ییاﺅ کی عمر 83 سال ہو چکی ہے۔ ان کی شادی 1976ءمیں ہوئی لیکن یہ ایک مختصر اور سادہ تقریب تھی جس کی ایک بھی تصویر نہیں بنائی گئی تھی۔ شادی کو 40 سال گزرجانے کے باوجود شانگ اور ییاﺅ کے دل میں یہ امنگ باقی تھی کہ وہ نوجوان جوڑوں کی طرح خوبصورت تصاویر بنوائیں۔ جب ان کی اس خواہش کا علم مقامی یونیورسٹی کے طلبا کو ہوا تو وہ ان کا خواب پورا کرنے کے لئے گاﺅں پہنچ گئے۔

امریکی فوجیوں نے اپنی ہی فوج کی خواتین اہلکاروں کے ساتھ ایسا شرمناک ترین کام شروع کردیا کہ ملک میں ہنگامہ برپاہوگیا، 30 ہزار فوجیوں نے مل کر 2 لڑکیوں کی

شانگ اور ییاﺅ نے ایک بار پھر وہی عروسی لباس زیب تن کیا جو وہ 40 سال قبل اپنی شادی کے موقع پر پہن چکے تھے اور ان کی انتہائی خوبصورت تصاویر بنائی گئیں۔ ان کی شادی کی تصاویر کا یہ البم جب سوشل میڈیا کی زینت بنا تو سب نے اسے بہت پسند کیا۔

شانگ اور ییاﺅ کے آٹھ بچے ہیں جبکہ پوتے پوتیوں اور نواسے نواسیوں پر مشتمل کل خاندان کی تعداد 53 ہے۔ معمر جوڑے کے عروسی فوٹوشوٹ کے موقع پر یہ سب لوگ بہت پرجوش تھے۔ معمر جوڑے کا کہنا تھا کہ فوٹ شوٹ نے انہیں ایک بار پھر دولہا، دلہن بنا دیا جس پر وہ بے حد خوش تھے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -