اضافی ٹکٹ چارجز کی وصولی پر تھیٹر مالکان سے بیان حلفی سمیت متعلقہ ریکارڈ طلب

اضافی ٹکٹ چارجز کی وصولی پر تھیٹر مالکان سے بیان حلفی سمیت متعلقہ ریکارڈ طلب

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے تھیٹرز میں اضافی ٹکٹ چارجز وصولی کے خلاف درخواست پر تھیٹرز مالکان سے بیان حلفی سمیت متعلقہ ریکارڈ طلب کر لیا ہے، عدالت نے ڈائریکٹر ایکسائز کو بھی ریکارڈ سمیت 29مارچ کو پیش ہونے کاحکم دیاہے،عدالت نے استفسار کیا ہے کہ محکمہ ایکسائز کتنا ٹیکس تھیٹرز سے وصول رہا ہے؟ آگاہ کیا جائے،ٹکٹ پراس کی قیمت کیوں نہیں لکھی جاتی؟تھیٹرز میں بھاری ٹکٹ وصول کرکے کیوں لوگوں(بقیہ نمبر10صفحہ12پر )

کو تفریح سے محروم کیا جارہا ہے، اگر 6 ہزار روپے وصول کرتے ہیں تو 1200روپے ٹیکس بنتا ہے ،جوتھیڑمالکان اداکریں ،عدالت نے ہدایت کی کہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن ڈیپارٹمنٹ تھیڑ کی ٹکٹوں پر12فیصد ڈیوٹی وصولی کو یقینی بنائے۔درخواست گزار کا موقف ہے کہ لاہور کے تھیڑز 6سے 8ہزار روپے فی ٹکٹ وصول کررہے ہیں جبکہ ٹکٹ پر قیمت بھی نہیں لکھی جاتی ،من مانی رقوم وصول کی جارہی ہیں لیکن مقررہ ٹیکس ادانہیں کیا جارہا، تھیٹرز کے ٹکٹ گھروں پر نرخ لسٹ آویزاں نہیں کی گئی،اس سلسلے میں واضح قانون سازی کی ضرورت ہے ،شالیمار تھیٹر کی طرف سے عدالت کو بتایا گیا کہ وہ ٹکٹ کا 3 ہزار روپے چارج کررہا ہے، الفلاح تھیٹرکے وکیل نے بتایا کہ تھیٹر میںآنے والے لوگوں سے اضافی وصولی نہیں کی جاتی، ٹکٹ پر قانوں کے مطابق ایکسائز ڈیوٹی وصول کر رہے ہیں،اس کیس کی مزید سماعت 29مارچ کو ہوگی۔

مزید : ملتان صفحہ آخر