اشیاء ضروریہ کی بڑھتی قیمتوں سے عوام پریشان، کاروبا ر بھی ٹھپ ہو کر رہ گئے

اشیاء ضروریہ کی بڑھتی قیمتوں سے عوام پریشان، کاروبا ر بھی ٹھپ ہو کر رہ گئے

لاہور( نیوز رپورٹر) صوبائی دالرلحکومت لاہور میں مہنگائی کے ہاتھوں عوام شدید پریشانی کا شکا ر ہیں جبکہ رمضان المبارک کی آمد آمد ہے اور خدشہ ہے کہ رمضان سے قبل سے ایک مرتبہ پھر اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں اضافہ کیا جائے گا جس سے عوام کی مشکلات میں مزید اضافہ ہوجائے گا اس حوالے سے روز نامہ پاکستان کے زیر اہتمام سروے میں دکانداروں کا کہنا ہے کہ حکومت ہمیں ریلیف دے تو ہم بھی عوام کو ریلیف فراہم کریں ۔اکبری منڈی کے تاجروں نے اس حوالے سے کہا کہ ملک میں مصنوعی مہنگائی نہیں ہونی چاہیے جو چیز جتنی قیمت کی ہے اتنے میں ہی فروخت کی جانی چاہیے حبیب،ہمایوں،ناصر اور زبیر نے کہا کہ ہم عرصہ سے اکبری منڈی میں کاروبار کررہے ہیں اور ہماری تو یہ ہی کوشش ہوتی ہے کہ ہم حکومت کی جانب سے مقررہ کردہ قیمتوں میں ہی اشیاء کو فروخت کرے ۔

کچھ لوگ ذخیرہ اندوزی بھی کرتے ہیں اور اپنی مرضی کی قیمتیں بھی مقرر کرتے ہیں تو ان کے خلاف ایکشن لینے کی ضرورت ہے اور یہ ذمہ داری تو حکومت کی ہے۔نبیل،حارث،شکیل اور ساجد نے کہا کہ اکبری منڈی سے پورے شہر میں اشیاء پہنچتی ہیں اور یہاں قائم انجمن تاجران حکومتی ریٹ پر چیزوں کی فروخت کو یقینی بنانے کی کوشش کرتے ہیں اس وقت ڈالر کی قیمت بہت زیادہ ہوگئی ہے اور اس وجہ سے ملک میں مہنگائی بڑھ رہی ہے۔ حکومت کو ڈالر کی قیمت کنٹرول کرنے کی ضرورت ہے اس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے شادمان اچھرہ اور مزنگ کے کریانہ سٹور کے مالکان ظہور، صادق، عابد،حامد،مہر خاور اور آفتاب نے کہا کہ ہم مقررہ قیمتوں میں اشیاء فروخت کرتے ہیں اور اکبری منڈی سے جس ریٹ میں ہمیں اشیاء ملتی ہیں ہم حکومت کی جانب سے مقررہ کردہ منافع ہی حاصل کرتے ہیں جو لو گ اپنی مرضی کی قیمت مقرر کئے ہوئے ہیں ان کے خلاف حکومت ایکشن لے۔ ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ملک میں مہنگائی کو روکے اور چیزوں کی قیمتوں میں کمی کرے تاکہ ہمیں بھی ریلیف مل سکے اور ہم عوام کو بھی ریلیف ملے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1