اسلام میں مزدوررکھنے کابھی طریقہ کارموجودہے،سپریم کورٹ،سندھ میں اساتذہ کی بھرتیاں غیرقانونی قرار

اسلام میں مزدوررکھنے کابھی طریقہ کارموجودہے،سپریم کورٹ،سندھ میں اساتذہ کی ...
اسلام میں مزدوررکھنے کابھی طریقہ کارموجودہے،سپریم کورٹ،سندھ میں اساتذہ کی بھرتیاں غیرقانونی قرار

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے اساتذہ کی خلاف ضابطہ بھرتیوں سے متعلق کیس میں بھرتیوں کو غیرقانونی قرار دے کر درخواست مستردکردی۔جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیئے کہ اسلام میں مزدوررکھنے کابھی طریقہ کارموجودہے،کمیٹی نے انٹرویوزکیے نہ ٹیسٹ لیااوراساتذہ بھرتی ہوگئے،

تفصیلات کے مطابق جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں بنچ نے اساتذہ کی خلاف ضابطہ بھرتیوں سے کیس کی سماعت کی،دوران سماعت جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیئے کہ اساتذہ کی بھرتیوں کاساراعمل ہی غیرقانونی ہے،وکیل اساتذہ نے کہا کہ بھرتیوں کایہ طریقہ کارپورے سندھ میں ہے۔

عدالت نے کہا کہ جب معاملات سامنے آئیں گے تو انہیں بھی پرکھیں گے،وکیل اساتذہ نے کہا کہ اسلام میں پسینہ خشک ہونے سے پہلے مزدوری دینے کاحکم ہے۔

جسٹس گلزار احمد میں ریمارکس دیئے کہ اسلام میں مزدوررکھنے کابھی طریقہ کارموجودہے،کمیٹی نے انٹرویوزکیے نہ ٹیسٹ لیااوراساتذہ بھرتی ہوگئے، عدالت نے بھرتیوں کوغیرقانونی قراردےکردرخواست مستردکردی ۔

مزید : قومی /علاقائی /سندھ /کراچی