پاکستان میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد میں مزید اضافہ ، سندھ اور بلوچستان میں باجماعت نماز پر پابندی عائد

پاکستان میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد میں مزید اضافہ ، سندھ اور ...
پاکستان میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد میں مزید اضافہ ، سندھ اور بلوچستان میں باجماعت نماز پر پابندی عائد

  



اسلام آباد ( ڈیلی پاکستان آن لائن )پاکستان میں کورونا وائرس کے کیسز میں تیزی کے ساتھ اضافہ ہوتا جارہاہے جبکہ چاروں صوبوں میں کہیں جزوی اورکہیں مکمل لاک ڈاﺅن ہے اور حکومت کی جانب سے شہریوں کو گھروں میں رہنے کی اپیل کی جارہی ہے ، ڈی جی خان قرنطینہ میں ڈیوٹی کرنیوالی خاتون سمیت دو ڈاکٹروں میں بھی کورونا کی تصدیق ہوگئی ۔ 

تفصیلات کے مطابق پاکستان میں اس وقت کورونا کیسز کی تعداد 1235 پر جا پہنچی ہے جبکہ نو افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں اور سات افراد نہایت تشویشناک حالت میں زیر علاج ہیں تاہم 23 افراد صحت یاب ہونے کے بعد گھروں کو لوٹ گئے ہیں ۔پنجاب اور سندھ میں کورونا کے کیسز میں تیزی کے ساتھ اضافہ ہورہاہے ، سندھ میں اب تک 429 ، پنجاب میں 408 ، خیبر پختون خواہ میں 147 ، بلوچستان میں 131 گلگت بلتستان میں 91 ، اسلام آباد میں 27 اور آزاد کشمیر میں 2 کیسز سامنے آئے ہیں ۔

یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ چین کے شہر ووہان سے شروع ہونے والا یہ وائرس اب تقریبا پوری دنیا میں پھیل چکا ہے اور چند ہی ملک اس سے ابھی تک محفوظ ہیں ۔ دنیا بھر میں مجموعی طور پو کورونا وائرس کے اب تک پانچ لاکھ 32 ہزار سے زائد کیسز سامنے آ چکے ہیں جبکہ 24 ہزار 75 لوگ جان کی بازی ہار گئے ہیں ۔

دو ڈاکٹر بھی کوورنا کا شکار

 سیکرٹری پرائمری ہیلتھ کیئر نے  ڈیرہ غازی خان قرنطینہ میں ڈیوٹی دینے والے دو ڈاکٹروں میں کورونا وائرس کی تصدیق کر دی۔ترجمان پرائمری ہیلتھ کیئر کے مطابق ڈی جی خان قرنطینہ میں کام کرنے والے ڈاکٹر اسامہ اور آئسولیشن وارڈ میں کام کرنے والی ڈاکٹر صباء میں وائرس کی تصدیق ہوئی ہے، دونوں ڈاکٹر خطرے سے باہر ہیں، طبیعت زیادہ خراب نہیں، ڈاکٹروں کو ہسپتال کے آئسولیشن وارڈز میں رکھا گیا ہے۔ترجمان کا کہنا ہے مشکل کی اس گھڑی میں فرنٹ لائن پر جہاد کرنے والے ڈاکٹر اور پیرا میڈیکل ورکر قوم کا فخر ہیں، قوم کی حفاظت کرنے والے ان جان نثار سپاہیوں کی سہولت اور حفاظت کے لیے ہر ممکن قدم اٹھایا جا رہا ہے۔

سندھ اور بلوچستان میں باجماعت نماز پر پابندی

سندھ اور بلوچستان میں مساجد میں نماز باجماعت اور جمعہ کے اجتماعات پر پابندی عائد کردی گئی ہے جب کہ پنجاب میں محکمہ اوقاف نے جمعہ مبارک کے لئے ہدایت نامہ جاری کر دیا ہے جس کے تحت نماز جمعہ میں بچوں، عمر رسیدہ اور بیمار لوگوں کو آنے پر پابندی لگادی گئی ہے۔

پنجاب میں مساجد میں نماز کی ادائیگی سے متعلق ایڈوائزری جاری

کورونا وائرس کے پھیلاﺅ کے خدشے کو مد نظر رکھتے ہوئے مساجد میں نمازوں کی ادائیگی سے متعلق پنجاب حکومت نے علماءکرام اور طبی ماہرین سے طویل مشاور ت کے بعد ایڈوائزری جاری کر دی ہے ۔پنجاب حکومت کی جانب سے اعلامیے میں کہا گیاہے کہ مساجد میں تین سے پانچ لوگ نماز ادا کر سکیں گے جن میں خطیب ، امام مسجد، موذن اور کیئر ٹیکر شامل ہیں جبکہ شہری گھروں میں نماز ادا کریں ۔پنجاب حکومت نے طبی ماہرین ہدایات کی روشنی میں علماءکرام سے طویل مشاورت کے بعد یہ فیصلہ کیا ہے ۔

وزیر خارجہ 

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کورونا وائرس کی روک تھام کے پیش نظرصرف نوٹی فکیشن نکالنے سے اجتماعات پر پابندی کا معاملہ حل نہیں ہوگا، اجتماعات کے معاملے پرعوام کوذہنی طورپرقائل کرنا پڑے گا، اتفاق ہوا ہے کہ مساجد میں اجتماعات کومحدود کیا جائے، تمام علما کرام اورصوبوں نے اتفاق کیا اجتماعات سے گریزکیا جائے۔

فردوس عاشق اعوان

معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ کورونا کے حوالے سے پاکستان چینی ڈاکٹرز کے علم، تجربے اور مہارت سے بھرپور استفادہ کرے گا۔

قلت

کورونا وائرس کی وجہ سے یوٹیلیٹی اسٹورز پر اشیاءخوردونوش کے لیے حکومت کے50 ارب اعلان کے باوجود اشیا کی قلت کا سامنا ہے۔ یوٹیلیٹی اسٹورز پر عملے کو فیس ماسک، گلوز اور ہینڈ سینی ٹائزر کی عدم فراہمی کے باعث عملے اور شہریوں کے کرونا سے متاثر ہونے کا شدید خدشہ ہے۔

مزید : کورونا وائرس /قومی