پی ایس ایل سے واپس جانے والے غیر ملکی کھلاڑی اب کیا کر رہے ہیں اور کیسے ہیں ؟

پی ایس ایل سے واپس جانے والے غیر ملکی کھلاڑی اب کیا کر رہے ہیں اور کیسے ہیں ؟
پی ایس ایل سے واپس جانے والے غیر ملکی کھلاڑی اب کیا کر رہے ہیں اور کیسے ہیں ؟

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )پاکستان سپر لیگ میں شامل کرکٹرز نے اپنے ممالک پہنچ کر خود کو تنہائی میں رکھا ہوا ہے۔

نجی ٹی وی جیونیوز کی رپورٹ کے مطابق دنیا بھر میں پھیلی وبا کورونا وائرس کی وجہ سے پاکستان سپر لیگ کو پہلے محدود کیا گیا اور پھر منسوخ کر دیا گیا۔پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے قومی و غیر ملکی کرکٹرز کے کورونا ٹیسٹ کروائے گئے جو سب کے سب منفی آئے۔

پی ایس ایل میں شامل بہت سے غیر ملکی کھلاڑیوں نے اپنے وطن پہنچ کر احتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے خود ساختہ تنہائی اختیار کر رکھی ہے۔کورونا وائرس کے سبب کرکٹرز اور دیگر کھیلوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات اپنی سرگرمیاں اور تبصرے سوشل میڈیا کے ذریعے سامنے لا رہی ہیں۔

چند روز قبل پشاور زلمی کے سابق کپتان اور ہیڈ کوچ ڈیرن سیمی نے سوشل میڈیا کے ذریعے آگا ہ کیا تھا کہ انہوں نے خود کو سینٹ لوشیا میں تنہائی میں رکھا ہوا ہے اور 18 روز بعد ہی گھر والوں سے ملاقات کریں گے۔اب پی ایس ایل ہی میں شامل دیگر غیر ملکی کرکٹرز نے بھی سوشل میڈیا کے ذریعے اپنے حالات اور سرگرمیوں سے آگاہ کیا ہے۔

لاہور قلندرز کے بین ڈنک کا کہنا ہے کہ بین الاقوامی سفر کے بعد قرنطینہ میں 9 روز ہو چکے ہیں، موجودہ صورتحال اب سنجیدہ ہوتی جا رہی ہے۔اس کے علاوہ کولن منرو، کرس لین اور ڈیل اسٹین بھی تنہائی میں وقت گزار رہے ہیں جب کہ سابق آسٹریلوی بلے باز اور کمنٹیٹر مائیکل سلیٹر بھی پاکستان سے جانے کے بعد قرنطینہ میں ہیں۔

آسٹریلوی کرکٹرکرس لین قرنطینہ کے دوران آن لائن کوچنگ میں مصروف ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ موجودہ صورت حال سے نکلنے کے لیے ہمیں متحد ہونے کی ضرورت ہے۔

خیال رہے کہ کورونا وائرس دنیا کے 198 ممالک تک پھیل چکا ہے اور اس وبا سے اب تک 22 ہزار سے زائد افراد ہلاک اور 5 لاکھ سے زائد متاثر ہو چکے ہیں۔پاکستان میں بھی کورونا وائرس کے باعث اب تک 9 اموات ہو چکی ہیں جب کہ 1200 سے زائد افرادکا علاج جاری ہے۔

مزید : کھیل