دفعہ 144 کے نفاذ کے باجوود شادی تقریب کے انعقاد کی خبر دینے پر عمرکوٹ کے صحافی کیخلاف جرگہ ، برادری سے نکال دیا گیا

دفعہ 144 کے نفاذ کے باجوود شادی تقریب کے انعقاد کی خبر دینے پر عمرکوٹ کے ...
 دفعہ 144 کے نفاذ کے باجوود شادی تقریب کے انعقاد کی خبر دینے پر عمرکوٹ کے صحافی کیخلاف جرگہ ، برادری سے نکال دیا گیا

  

عمرکوٹ(سید  ریحان شبیر )اندھیر نگری چوپٹ راج پورے سندھ میں  دفعہ  144 نافذ  ہونے کے باوجود شادی تقریب کے انعقاد کی خبر دینے اور ویڈیو وائرل کرنے پر عمرکوٹ کے صحافی کے خلاف بااثرافراد کا   جرگہ صحافی پر سماجی پابندیاں عائد کر کے برادری سے نکال دیا گیا۔

تفصیلات کےمطابق   عمرکوٹ ضلع  میں کورونا وائرس کےبعد عمرکوٹ سمیت پورے سندھ میں حکومت سندھ کی جانب  سےدفعہ 144 نافذ  کیےجانےکے باوجود شادی کی تقریب کے انعقاد کی خبر وائرل کرنے حقائق رپورٹنگ کرنےپر بااثرافراد کا   صحافی کے خلاف جرگہ منعقد کیا گیا  جرگے کے ذریعے صحافی جانب دلوانی کو برادری سے نکال دیا گیا اور دھمکیاں دی جاری رہی  ہیں۔   یہ امر قابل ذکر ہےکہ بودر فارم پولیس نے تین روز قبل وڈیو وائرل ہونے پر تیں دولہوں سمیت آٹھ افراد کے خلاف دفعہ 144 کے تحت بودر فارم تھانے پر مقدمہ درج کیا گیا تھاصحافی کےخلاف مبینہ انتقامی کارروائیوں کی عمرکوٹ کے سنئیر صحافیوں سیدریحان شبیر،ناہید حسین   خٹک ،کامران کےکے، پریس کلب عمرکوٹ کےصدر فقیررسول بخش، اتم سنگراسی عمران شاہ،غلام محمدکمبار،اور دیگرصحافیوں نےشدید مذمت کرتے ہوئے حکام بالا آئی جی سندھ پولیس انتظامیہ عمرکوٹ ،ایس ایس پی  عمرکوٹ  ڈپٹی کمشنر عمرکوٹ،ایس ایچ او بودر فارم   سے مطالبہ کیا ہےکہ صحافی جانب دلوانی کو سچ لکھنے حقائق پر مبنی رپورٹنگ کرنے پر دی جانے والی دھمکیوں کا فوری نوٹس لیا جائے ۔صحافی کو تحفظ دیا جائے صحافی کےساتھ انصاف کیا جائے ۔

عمرکوٹ کے صحافیوں نے صحافی جانب دلوانی کو گاؤں سے نکلانے بےدخل کرنے اور جانی مالی نقصان پہنچانے کی دھمکیوں کی شدید مذمت بھی کرتے ہوئے مطالبہ کیا اگر پولیس نے حکام بالا نے صحافی کو دھمکانے اور یکطرفہ طور گاؤں سے بےدخل نکلانے والوں کے خلاف کروائی نہ کی تو عمرکوٹ ضلع بھر کے صحافی سندھ بھر  میں وسیع احتجاج کرنے پرمجبور ہونگے۔

مزید :

علاقائی -سندھ -عمرکوٹ -