نظامِ مصطفی ؐ ہی نظامِ پاکستان کہلانے کا حقدار ہے،اشرف جلالی

 نظامِ مصطفی ؐ ہی نظامِ پاکستان کہلانے کا حقدار ہے،اشرف جلالی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
لاہور(نمائندہ خصوصی) تحریک لبیک یارسول اللہ ک وسلم و تحریک صراط مستقیم کے زیر اہتمام ملک میں نظام مصطفی ؐ کی جدو جہد مزید تیز کرنے کے لیے مرکز صراط مستقیم تاج باغ لاہور میں ”نظامِ پاکستان کانفرنس“ کا انعقاد کیا گیا۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے تحریک کے سربراہ ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی نے کہاکہ نظامِ مصطفی ؐ ہی نظامِ پاکستان کہلانے کا حقدار ہے۔ کاش کہ آج حکومتی اور اپوزیشن جماعتوں کے قافلے اسلام آباد کے لیے نہیں، اسلام کے لئے نکلتے۔پاکستان کی مخصوص ساخت کی وجہ سے دیگر نظامہائے حکومت میں پاکستان کے مسائل کا حل نہیں ہے۔ 
شریعت اللہ تعالیٰ اور اس کے رسول? کی طرف سے ہے، اس کو نافذ کرنا حکمران کی ڈیوٹی ہے۔ نظامِ پاکستان کا فیصلہ قیام پاکستان سے پہلے کر لیا گیا تھا مگر افسوس ہے کہ آج تک وہ نظام نافذ نہیں کیا جا سکا۔ تحریک آزادی میں جد و جہد کا مقصد ہی یہ تھا کہ ایسی زمین حاصل کی جائے جس کا نظام قرآن و سنت کے تابع ہو۔ جب تک نظامِ پاکستان، نظامِ مصطفی? کے تابع نہیں ہو جاتا، اس وقت تک پاکستان نامکمل ہے۔ قیامِ پاکستان کے بعد نظامِ پاکستان کی خاطر 28 مارچ 1948? کو جمعیت علمائے پاکستان کی بنیاد رکھی گئی جس نے اسمبلی کے اندر اور باہر اصلاحِ نظام کے لیے تاریخی کردار ادا کیا۔ حضرت خواجہ قمر الدین سیالوی، حضرت مولانا شاہ احمد نورانی اور حضرت مولانا محمد عبد الستار خان نیازی جیسے بزرگوں نے جمعیت علمائے پاکستان کے پلیٹ فارم سے نظامِ پاکستان کے لیے بھرپور جدو جہد کی۔ حقیقت یہ ہے کہ مچھلی کے لیے اتنا پانی ضروری نہیں جتنا کہ پاکستان کے لیے نظامِ مصطفی? ضروری ہے۔ نظامِ پاکستان کانفرنس میں مولانا محمد عمر نقشبندی، مولانا منظور احمد رضوی، محمد شعیب جلالی، مفتی محمد حناد رضا حبیبی، مولانا محمد ابراہیم جلالی و دیگر نے شرکت کی۔