صدر مملکت کے زیر صدارت اجلاس،علماء مشائخ کا اسلاموفوبیا،دہشتگردی کے واقعات پر اظہار تشویش

صدر مملکت کے زیر صدارت اجلاس،علماء مشائخ کا اسلاموفوبیا،دہشتگردی کے واقعات ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


         اسلام آباد(آئی این پی)صدر مملکت عارف علوی کی زیر صدارت علماء کرام کیساتھ چاروں صوبائی/گلگت بلتستان کے گورنر ہاؤسز، صدر ہاؤس آزاد کشمیر سے ویڈیو لنک مشاورتی اجلاس کا اعلامیہ جاری کر دیا گیا۔جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق علما و مشائخ نے ہندوستان اور مقبوضہ کشمیر میں اسلاموفوبیا کے منفی اثرات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم دہشت گردی کے تمام واقعات بشمول سیالکوٹ، میاں چنوں، ساہیوال اور پشاور کی بھرپور مذہب کرتے ہیں اور حکومت سے درخواست کرتے ہیں کہ اسکی روک تھام کیلئے موثر کارروائی جاری رکھی جائے اعلامیہ کے مطابق صدر مملکت عارف علوی کی زیر صدارت قومی علما و مشائخ کا اجلاس ہفتہ کو اسلام آباد اور تمام صوبائی دارلخلافوں میں ویڈیو لنک کے ذریعہ منعقد کیا گیا۔ اعلامیہ کے مطابق اجلاس میں کرونا وبا کی احتیاطی تدابیر کے خاتمہ، معاشرتی خرابیوں کی اصلاح میں علما و مشائخ کے کردار، معاشرے میں جھوٹی خبریں، غیبت اور بد اخلاقی کی روک تھام، عورت کا وراثت میں حق، طہارت و صفائی، تزکہی نفس کے اہتمام، اسلاموفوبیا  کے تدارک کی قرار دار اور عالمی دن مقرر کرنے کے حوالے سے تفصیلی بحث کی گئی۔ وبا کے دوران علمائے کرام ومشائخ عظام کے بھرپور تعاون کے ذریعے ہی مذہبی عبادات اور اجتماعات میں احتیاطی تدابیر پر عملدرآمد ہوا۔ پاکستان پورے عالم اسلام میں وہ واحد ملک تھا جس نے کورونا وبا کے عروج کے ایام میں بھی احتیاطی تدابیر کے ساتھ مساجد وامام بارگاہوں کو اللہ تعالی کی عبادت اور مناجات کیلئے کھلا رکھا۔ مساجد کی انتظامیہ اور وارثان ممبر ومحراب نے جس نظم وضبط اور ڈسپلن کا مظاہرہ کیا وہ بے مثال تھا۔علما کرام اور مشائخ عظام وزیر اعظم کو اسلاموفوبیا کے تدارک اور ناموسِ رسالت ؐ کیلئے عالمی سطح پر کی گئی کوششوں پر خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ سوشل اور الیکٹرانک میڈیا کے ذریعے عوامی بیداری کیلئے معتبر علما  اور دینی سکالرز اسلاموفوبیا کیخلاف قرار داد اور اسکی ضرورت و اہمیت کے حوالے سے اشاعتی مہم کا اہتمام کریں۔ علما و مشائخ مسجد و محراب سے معاشرتی مسائل کے حل جیسا کہ زچہ وبچہ کی صحت، ماحول کی صفائی، خواتین کے وراثت کے حقوق، حفظان صحت، بہبود آبادی وغیرہ میں پہلے بھی اپنا کردار ادا کرتے رہے ہیں اور اس ضمن میں حکومتی کوششوں کا ساتھ دینگے۔ہم فاسق کی خبر، غیبت اور فیک نیوز کی ٹی وی اور سوشل میڈیا پر یلغار کے حوالے تشویش کا اظہار کرتے ہیں۔ ہم ممبر و محراب، خاندان، سکول اور مدارس کے ذریعے عوامی آگاہی اور کردار سازی کے کام کو مزید بڑھاتے ہوئے حکومتی کوششوں کا مکمل ساتھ دیں گے۔ علما و مشائخ ہندوستان اور مقبوضہ کشمیر میں اسلاموفوبیا کے منفی اثرات پر تشویش کا اظہار کرتے ہیں۔ہم دہشتگردی کے تمام واقعات بشمول سیالکوٹ، میاں چنوں، ساہیوال اور پشاور کی بھرپور مذہب کرتے ہیں اور حکومت سے درخواست کرتے ہیں کہ اسکی روک تھام کیلئے موثر کارروائی جاری رکھی جائے۔ماہ رمضان کے استقبال کے حوالے سے قوم سے اپیل کرتے ہیں کہ خشو ع و خضوع سے ملکی ترقی و سلامتی، مغفرت کی دعائیں مانگیں اور عبادات اور خیرات کا اہتمام کریں یہ فورم حکومت کو او آئی سی کے وزرا خارجہ اجلاس کے کامیاب انعقاد پر مبارکباد پیش کرتا ہے۔ ہم آخر میں اس بات کا اعادہ کرتے ہیں کہ تمام علما و مشائخ مکمل اتحاد و اتفاق کے ساتھ ممبرو محراب کے ذریعے قرآن و سنت کے راستے منور کرتے رہیں گے۔ اللہ تعالی ہمارا حامی و ناصر ہو۔
اجلاس 

مزید :

صفحہ اول -