سید علی گیلانی کا سانحہ شوپیاں کے پانچ سال مکمل ہونے پر 30مئی کوہڑتال کا اعلان

سید علی گیلانی کا سانحہ شوپیاں کے پانچ سال مکمل ہونے پر 30مئی کوہڑتال کا اعلان

ممبئی (این این آئی)مقبوضہ کشمےر مےں بزرگ حرےت رہنماسید علی گیلانی نے سانحہ شوپےان کے پانچ سال بعد بھی لواحقےن کو انصاف نہ ملنے کے خلاف 30 مئی کو ضلع شوپیاں میں مکمل ہڑتال اور مقتولےن کےلئے مساجد میں دعائیہ مجالس کا اہتمام کرنے کی اپےل ہے۔ سےد علی گےلانی نے سرےنگر سے جاری اےک بےان مےں کہا کہ شوپیاں سانحہ کشمیریوں کےلئے ایک گہرا صدمہ ہے جس کو کسی بھی صورت میں فراموش نہیں کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے قابض انتظامےہ سے مطالبہ کےا کہ وہ آسیہ اور نیلوفرکے قتل اور بے حرمتی کے مقدمے کو دوبارہ کھولے۔انہوں نے کہا کہ شوپےان سانحے کے ذمہ دار ابھی تک دندناتے پھر رہے ہیں اور قابض انتظامےہ کی طرف سے انہیںبچانے کی پالیسی برابر جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ آسیہ اور نیلوفر کے قاتل نامعلوم نہیں تھے ۔

لیکن تمام حقائق اور شواہد کو ہوشیاری کے ساتھ ختم کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ عمر عبداﷲ نے سانحہ کے دوسرے دن بغیر کسی ثبوت کے کہہ دیا تھاکہ یہ خواتین حادثاتی طورپر نالے میں ڈوب کر مر گئی ہیں۔ سےد علی گےلانی نے تابندہ غنی کے قاتلوں کو بھی جلد ازجلد کیفر کردار تک پہنچانے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ انصاف میں تاخیر ناانصافی کے برابر ہے۔ انہوں نے کہاکہ تابندہ غنی قتل کی مقدمے میں بھی تاحال کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا ہے جس سے لواحقین ذہنی کوفت اور عذاب میں مبتلا ہیں۔ بزرگ رہنما نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے ہاتھوں خواتین کے ساتھ انتہائی ناروا اور تذلیل آمیز سلوک روا رکھا جارہا ہے اوران پر ناقابل بیان مظالم ڈھائے جارہے ہیں۔ سےد علی گےلانی نے انسانی حقوقِ کی عالمی تنظیموں سے اپیل کی ہے کہ وہ مقبوضہ علاقے میں خواتےن کی حالت زار کا سنجیدہ نوٹس لیں اوران مجرموں کو سزا دلوانے کے سلسلے میں اپنا کردار ادا کرےں جو خواتین کی اجتماعی آبروریزی اور قتل جےسے جرائم میں ملوث ہیں۔

مزید : عالمی منظر