افغان حکومت کا امریکہ کی جانب سے ٹیلی فون ریکاڈ کر نے پر احتجاج

افغان حکومت کا امریکہ کی جانب سے ٹیلی فون ریکاڈ کر نے پر احتجاج

 افغان حکومت کا امریکہ کی جانب سے ٹیلی فون ریکاڈ کر نے پر احتجاج                                                     کابل(این این آئی)افغان حکومت نے امریکہ کی جانب سے افغانستان کے تمام ٹیلی فون ریکارڈ کرنے پراحتجاج کیا ہے ۔گزشتہ روز کابل میں صدر حامد کرزئی کی صدارت میں کابینہ اجلاس میں قومی سلامتی کے مشیر کو ہدایت کی گئی کہ امریکہ سے اس غیرقانونی اقدام پر باضابطہ احتجاج کرے ۔وکی لیکس نے چند دن پہلے امریکی حکومت کی ایک ایسا دستاویز جاری کی ہے جس میں امریکی افواج کی جانب سے افغانستان کے کام باہر کئے جانیوالے ٹیلی فون ریکار ڈ کئے جاتے ہیں۔ یہ انکشاف بھی کیا گیا کہ اس مقصد کیلئے امریکی افواج نے افغانستان میں خصوصی آلات نصب کئے ہیں۔ افغان کابینہ کے اجلاس میں امریکہ کے اس اقدام کو غیرقانونی قرار دیتے ہوئے اس کو دو طرفہ معاہدوں کی خلاف ورزی قرار دیا۔ کابینہ اجلاس کے بعد جاری بیان میں کہاگیا کہ وزیرمواصلات نے کابینہ اراکین کو امریکی فوج کی جانب سے ٹیلی فون ٹیپ کرنے سے آگاہ کیا کابینہ نے امریکی اقدام کو ملک کی حاکمیت اعلیٰ، شہریوں اورانسانی حقوق کی خلاف ورزی قراردیا۔

مزید : عالمی منظر