لیبیا کے وزیراعظم نے پارلیمان سے اعتماد کا ووٹ حاصل کر لیا

لیبیا کے وزیراعظم نے پارلیمان سے اعتماد کا ووٹ حاصل کر لیا

                                      طرابلس(آن لائن)لیبیا کے وزیراعظم احمد معیتیق نے اپنی مجوزہ کابینہ کے لیے جنرل نیشنل کانگریس ( عبوری پارلیمان ،جی این سی) سے اعتماد کا ووٹ حاصل کر لیا ہے۔پارلیمان کے ایک رکن محمد العماری نے بتایا ہے کہ ایوان میں حاضر چورانوے میں سے تراسی ارکان نے کابینہ کے حق میں ووٹ دیا ہے۔احمد معیتیق کی کابینہ مستعفی وزیراعظم عبداللہ الثنی کی حکومت کی جگہ لے گی۔انھوں نے گذشتہ ماہ ملک میں جاری بدامنی پر قابو پانے میں ناکامی کے بعد عہدہ چھوڑنے کا اعلان کردیا تھا۔جی این سی نے مئی کے آغاز میں بیالیس سالہ کاروباری شخصیت احمد معیتیق کو وزیراعظم منتخب کیا تھا۔انھیں اسلامی جماعتوں کی حمایت حاصل ہے لیکن ان کے انتخاب کے چند روز بعد ایک سابق باغی جنرل خلیفہ حفتر کے جنگجوو¿ں نے طرابلس میں پارلیمان کی عمارت پر حملہ کردیا تھا اور بعض ارکان کو یرغمال بنا لیا تھا۔احمد معیتیق 2011ءمیں سابق مطلق العنان صدر معمر قذافی کی حکومت کے خاتمے کے بعد لیبیا کے پانچویں اور نوجوان وزیراعظم ہیں۔قذافی کے قتل اور اقتدار کے خاتمے کے بعد پے در پے برسر اقتدار آنے والی حکومتیں خانہ جنگی کا شکار ملک میں اپنی عمل داری قائم کرنے میں ناکام رہی ہیں۔مقتول صدر کے خلاف بغاوت میں اہم کردار ادا کرنے والے باغی جنگجوو¿ں نے ہتھیار نہیں پھینکے تھے اور نہ وہ سکیورٹی فورسز میں شامل ہوئے تھے۔انھوں نے طرابلس سمیت اپنے زیر نگیں علاقوں میں اپنی اپنی عمل داری قائم کر رکھی ہے اور حکومت کے لیے دردسر بنے ہوئے ہیں۔

مزید : عالمی منظر