دبئی میں مزدوروں کی شامت

دبئی میں مزدوروں کی شامت
دبئی میں مزدوروں کی شامت

  

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) برطانوی اخبار انڈیپنڈنٹ نے انکشاف کیا ہے کہ دبئی میں کام کرنے والی ایک تعمیراتی کمپنی نے اپنے ہڑتالی ملازمین کو دبئی کی پولیس کے حوالے کر دیا جس نے ان ملازمین پر تشدد کیا، انہیں جیل میں ڈالا اور پھر ملک سے نکال دیا۔ اخبار کے مطابق یہ ملازمین ایک یونیورسٹی کے زیر تعمیر پراجیکٹ پر کام کر رہے تھے اور انہوں نے اپنی تنخواہ میں اضافے کا مطالبہ کیا تھا۔ اطلاعات کے مطابق ان ملازمین کی تنخواہ 121 پاؤنڈ فی مہینہ تھی جس میں اضافے کا مطالبہ کیا جا رہا تھا۔ بی کے گلف نامی یہ کمپنی برطانوی تعمیراتی کمپنی بیلفر بیوٹی کا دبئی میں مشترکہ منصوبہ ہے اور ان دنوں یہ دبئی میں مشترکہ منصوبہ ہے اور ان دنوں یہ دبئی میں نیویارک یونیورسٹی کے ایک کیمپس کی تعمیر میں مصروف ہے۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ کمپنی کے حکام نے ہڑتال کرنے والے ملازمین کے خلاف پولیس کو بلایا اور انہیں گرفتار کروا دیا۔ چالیس ملازمین کو نو دن تک دبئی کی جیل میں بدترین تشدد کا نشانہ بنایا گیا اور پھر ملک بدر کر دیا گیا، ان میں پاکستانی ملازمین بھی شامل ہیں۔ نیویارک یونیورسٹی کی انتظامیہ نے ملازمین سے بدسلوکی پر معافی مانگ لی ہے۔

مزید : انسانی حقوق