اربوں روپے ادائیگی کے باوجود 7 سو 36 کنال اراضی ٹیوٹا کے نام منتقل نہ ہو سکی

اربوں روپے ادائیگی کے باوجود 7 سو 36 کنال اراضی ٹیوٹا کے نام منتقل نہ ہو ...

                لاہور(شہباز اکمل جندران//انویسٹی گیشن سیل) ادائیگی کے باوجود ،چار ارب روپے سے زائد مالیت کی7سو36کنال اراضی ٹیوٹا پنجاب کے نام منتقل نہ ہوسکی۔ جبکہ 70کروڑ ورپے سے زائد مالیت کی 102کنال اراضی پر قبضہ مافیا نے پنجے گاڑلیے۔جنرل مینجر آپریشن نے قبضہ چھڑانے کا حکم دیدیا ہے۔ باوثوق ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ ٹیکنیکل ایجوکیشن اینڈ ووکیشنل ٹریننگ اتھارٹی پنجاب کے صوبے بھر میں 9مختلف سنٹروں میںاتھارٹی نے 4ارب روپے سے زائد مالیت کی 7سو 36کنال اراضی خریدی۔ لیکن انتظامیہ کی مبینہ غفلت کے باعث مذکورہ اراضی ریونیو ریکارڈ میں ا تھارٹی کے نام منتقل نہ ہوسکی۔ جبکہ اسی دوران 70کروڑ روپے سے زائد مالیت کی 102کنال اراضی پر ناجائز قابضین نے قبضہ کرلیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ قبضہ مافیا نے مختلف شہروں میں واقع ٹیوٹا کی انتظامیہ اور سٹاف کی مبینہ ملی بھگت سے قبضہ کررکھا ہے۔ معلوم ہواہے کہ اتھارٹی کی خرید کردہ جس اراضی کا انتقال تاحال اتھارٹی کے نام نہیں ہوسکا اس میں اتھارٹی نے لائٹ انجنئیرنگ سروس سنٹر گوجرانوالہ کے لیے ایک کروڑ 63لاکھ روپے کی لاگت سے 16کنال اراضی خریدی۔ گورنمنٹ ایگری کلچر مشینری سکول فیصل آباد کی 333کنال اراضی 16کروڑ35لاکھ روپے میں خرید ی گئی۔ جس میں سے پانچ کروڑ 51لاکھ روپے مالیت کی 17کنال اراضی پر غیر قانونی قابضین نے قبضہ کررکھا ہے۔ اسی طرح جی ٹی ٹی سی سمندری کے لیے 85لاکھ روپے مالیت کی 16کنال اراضی خرید ی گئی ۔ گورنمنٹ کالج آف ٹیکنالوجی ریلوے روڈ لاہور کے لیے 45کروڑ روپے کی لاگت سے 51کنال اراضی خریدی گئی۔ جس میں سے ایک کروڑ 40لاکھ روپے مالیت کی دو کنال اراضی پر ناجائز قابضین نے قبضہ کررکھا ہے۔ گورنمنٹ کالج آف ٹیکنالوجی لٹن روڈ ، جین مندر کے لیے 44کروڑ روپے کی لاگت سے خریدی جانے والے 31کنال اراضی میں سے 15کروڑ ورپے مالیت کی 11کنال اراضی پر ناجائز قابضین نے قبضہ کررکھا ہے۔ گورنمنٹ سٹاف ٹریننگ کالج فیصل آباد کے لیے ایک ارب 23کروڑ روپے کی لاگت سے 123کنال اراضی خریدی گئی ۔ جس میں سے 8کروڑ روپے مالیت کی 8کنال اراضی پر غیر قانونی قبضہ ہوچکا ہے۔اسی طرح گورنمنٹ ٹیکنیکل ٹریننگ انسٹیٹیوٹ گلبرگ لاہور کے لیے ایک ارب 4کروڑ روپے کی لاگت سے 160کنال اراضی خریدی گئی۔جس میں سے 37کروڑ روپے سے زائد مالیت کی 48کنال اراضی پر غیر قانونی قابضین نے پنجے جما رکھے ہیں۔جبکہ گورنمٹ کالج آف ٹیکنالوجی ملتان کے قاسم پور کالونی سنٹر کے لیے 63کروڑ 36لاکھ روپے کی مالیت سے 36ایکڑ اراضی خریدی گئی ۔ جس میں سے دوکروڑ روپے مالیت کی 9کنال اراضی پر ناجائز قابضین کا قبضہ ہے۔معلوم ہواہے کہ اتھارٹی کے جنرل مینجر آپریشن نے ادارے کے تمام ڈویژنل اور زونل مینجروں کو خط لکھا ہے کہ محکمے کی خرید کردہ اراضی کو فی الفور محکمے کے نام منتقل کیا جائے اور ناجائز قابضین کے زیر قبضہ اراضی واہگزار کروائی جائے۔

 

مزید : صفحہ آخر