,ماضی کی تلخ یادوں کو بھلانا ممکن

,ماضی کی تلخ یادوں کو بھلانا ممکن

کیلی فورنیا (مانیٹرنگ ڈیسک ) ماضی کی یادیں جتنی تلخ ہوں ان سے نجات پانا اتنا ہی مشکل ہوتا ہے لیکن جدید سا ئنس نے اس بات کو ممکن بنا دیا ہے کہ ہم ماضی کے درد ناک لمحوں کو بھلا سکیں۔ امریکہ کی ورجینیا کامن ویلتھ یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے ایک ایسی گولی تیار کرلی ہے جو کئی سال قبل پیش آنے والی بری یادوں کے تجربات کی یادوں کو ذہن سے ختم کر سکتی ہے اور ایسے تجر بات کے نتیجے میں پیدا ہونے والے نفسیاتی مسائل ، خوف اور ازدواجی زندگی کی دشواریوں پر قابو پانے میں مدد د ے سکتی ہے۔ فنگولی موڈ ، جو کہ گلینیا نامی برینڈ کے تحت ایک گولی کی شکل میں دستیاب ہے۔یہ مدافعتی قوت کو دبا کر عضلات کو سخت کرنے والی بیماری سکلیروسس کے علاج میں استعمال ہوتی ہے۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ یہ گولی ہمیں درد کے سابقہ تجربوں کو بھولنے میں مدد دے سکتی ہے۔ تحقیق میں ڈاکٹر سارہ سپیگل اور ان کے رفقائ نے معلوم کیا کہ جب چوہوں پر اس گولی کا تجربہ کیا گیا تو وہ جلد ہی ماضی کے نا خوشگوار واقعات کو بھول گئے۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ ذہن سے ماضی کی یادوں کو مٹانے کا معاملہ بہت متنازعہ ہے اور ناقدین کا خیال ہے کہ ماضی کی یادوں کو مٹانے سے وہ چیز ہی ختم ہو جائے گی جو ہمیں ایک سوچنے سمجھنے اور محسوس کرنے والا انسان بناتی ہے۔

مزید : علاقائی