مجرموں کا پیچھا کرنیوالی ڈولفن فورس بنانے کا فیصلہ

مجرموں کا پیچھا کرنیوالی ڈولفن فورس بنانے کا فیصلہ

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) شہر میں بڑھتے ہوئے جرائم پر قابو پانے کے لئے ترکی کی ڈوفن پولیس کی طرز پر ڈولفن فورس بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ڈولفن فورس بنانے کی سفارش ترک پولیس افسران کی سفارشات کو مد نظر رکھ کر کی گئی ہے۔ ترک پولیس افسران کے وفد نے سی سی پی او لاہور سے ملاقات کی تو سی سی پی او چودھری شفیق احمد نے ترک پولیس افسران کو بتایا کہ مجاہد فورس لاہور میں گشت کے لئے بنائی گئی تھی مگر کچھ عرصہ سے یہ فورس اسکارٹ پر تعینات ہوچکی ہے جبکہ موٹرسائیکل بھی نہ ہونے کے برابرہیں۔ صرف پندرہ موٹرسائیکل کام کررہی ہیں یہ بھی بہت پرانی ہیں۔ مجاہد فورس کی 60 کے قریب گاڑیاں روزانہ اسکارٹ ڈیوٹی پر جاتی ہیں جبکہ 12 گاڑیاں خراب کھڑی ہیں۔ جو گاڑیاں اور موٹرسائیکل اسکارٹ ڈیوٹی پر جاتی ہیں وہ بھی دس سال سے پرانی ہیں۔ ترک پولیس افسران نے بتایا کہ انہوں نے وزیراعلیٰ شہباز شریف کو بتایا تھا کہ اگر شہر میں جرائم پر قابو پانا ہے توموثر گشت کا نظام اپنایا جائے اور اس کے لئے ہیوی بائیکس استعمال کی جائیں۔ جس طرح ترک پولیس کریمنلز کا مقابلہ کرنے کے لئے 1250 سی سی کی موٹرسائیکل استعمال کرتی ہے تاہم لاہور کی سڑکوں پر 5 سو سے 750 سی سی کی موٹرسائیکل استعمال کی جائیں۔ پہلے مرحلے میں 700موٹرسائیکلیں لی جائیں گی اور ان کو چلانے کے لئے انتہائی فٹ پولیس جوانوں کو تربیت دی جائے تاکہ وہ جرائم پیشہ افراد کا پیچھا کرکے قلع قمع کرسکیں۔ اس فورس کو ڈولفن فورس کا نام دیا جائے گا۔ آئی جی پنجاب خان بیگ سے جب بات کی گئی تو ان کا کہنا تھا کہ جرائم پر قابو پانے کے لئے موثر گشت کرنے والی ڈولفن فورس جلد کام شروع کردے گی اور ڈولفن فورس کے قیام کے بعد مجاہد فورس اور محافظ فورس کی جگہ ڈولفن فورس گشت کرے گی۔ ان جوانوں کو انتہائی جدید اسلحہ سے بھی لیس کیا جائے گا۔

مزید : لاہور