فلسطینی تجارتی خسارے کا حجم 322 ملین ڈالر سے تجاوز کرگیا

فلسطینی تجارتی خسارے کا حجم 322 ملین ڈالر سے تجاوز کرگیا

رام اللہ (این این آئی)فلسطین میں سرکاری سطح پر جاری رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ قابض صہیونی ریاست کی جانب سے ظالمانہ پالیسیوں اور معاشی اجارہ داری کے نتیجے میں فلسطین کا تجارتی خسارے کا حجم 322.1 ملین ڈالر سے تجاوز کرگیا ہے۔اطلاعات کے مطابق فلسطین کے تجارتی اور معاشی اتارو چڑھاؤ پرنظر رکھنے والے ادارے کی جانب سے جاری رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ فلسطین میں تجارتی خسارے کا حساب درآمدات اور برآمدات کو سامنے رکھتے ہوئے لگایا جاتا ہے۔ اس سلسلے میں وزارت اقتصادیات، مالیات اور ایوان صنعت وتجارت کی جانب سے فراہم کردہ اطلاعات کو بھی پیش نظررکھا جاتا ہے۔رپورٹ کے مطابق رواں سال مارچ تک برآمدات کا حجم 78.2 ملین امریکی ڈالر رہا جو کہ پچھلے ماہ کی نسبت 15 فیصد اور پچھلے سال کی نسبت 6.7 فیصد اضافہ ہے، اسی طرح اسرائیل سے ہونیوالی برآمدات کا حجم 87.3 فیصد ریکارڈ کیا گیا. ، اس اعتبار سے مجموعی طورپر 68.2 ملین ڈالر کی برآمدات ہوئیں جو کہ پچھلے ماہ کی نسبت 14.5 فی صد زیادہ ہے۔رپورٹ کے مطابق مارچ تک فلسطینی درآمدات کے حجم میں 15.8 فیصد اضافہ ہوا تاہم فروری کی نسبت درآمدات میں 4.3 فیصد کمی دیکھی گئی۔ پچھلے ایک سال کے دوران فلسطین کی درآمدات کا خسارہ مجموعی طورپر 400.3 ملین امریکی ڈالر رہا۔جائزے کے مطابق فلسطینی درآمدات کاسالانہ حجم 60.1 فیصد رہا جس میں سالانہ بنیادوں پر 12.6 فی صد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

مزید : کامرس