سانحہ ڈسکہ پولیس بربریت کی انتہا ہے‘ شہباز حسین چوہدری

سانحہ ڈسکہ پولیس بربریت کی انتہا ہے‘ شہباز حسین چوہدری
سانحہ ڈسکہ پولیس بربریت کی انتہا ہے‘ شہباز حسین چوہدری

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

جدہ ( بیورو چیف) سانحہ ڈسکہ پولیس کی بربریت کی انتہا ہے۔ پولیس گردی اب معمول بنتی جاری ہے ۔پنجاب حکومت اب صرف پولیس کے سہارے ہی چل رہی ہے۔ وکلاء کے ساتھ ظلم و بربریت کی مثال نہیں ملتی جہاں عوام کو انصاف دلانے والے بھی محفوظ نہ ہوں تو وہاں کا پھر اللہ ہی حافظ ہے۔ حکومت پنجاب سانحہ ڈسکہ کے بعد فوری طور پر مستعفیٰ ہوجانا چاہیے۔ ان خیالات کا اظہار سابق وفاقی وزیر شہباز حسین چوہدری نے نمائندہ سے خصوصی بات چیت میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ قانون کے نام نہاد رکھوالوں کے ہاتھوں قانون کی ترجمانی کرنے والوں پر براہ راست فائرنگ کرنا ناقابل برداشت عمل ہے۔ ہم اس کی بھرپور مذمت کرتے ہیں جس طرح ڈسکہ میں پولیس نے وکلاء پر گولیاں برسائیں تاریخ میں کہیں اس کی مثال نہیں ملتی۔ حکومت پنجاب کو چاہیے کہ وہ خود کو عدالت میں پیش کرے۔ شہباز چوہدری نے کہا کہ جے آئی ٹی کاڈھونگ رچانے کا کوئی فائدہ نہیں یہ صرف وقت کا ضیاع ہوگا جس کے نتائج کبھی بھی شفاف نہیں ہوسکتے، اس کی مثال سانحہ ماڈل ٹاؤن ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ماضی میں بھی جس طرح پنجاب پولیس نے نہتے لوگوں پر گولیاں چلائیں وہ بھی ہمارے سامنے ہے ۔صوبہ پنجاب اب پولیس سٹیٹ بن چکاہے۔

مزید : عالمی منظر