ٹارگٹ کلنگ کے واقعات حکومتی اداروں کی ناقص کارکردگی کا ثبوت ہے،علامہ عارف

ٹارگٹ کلنگ کے واقعات حکومتی اداروں کی ناقص کارکردگی کا ثبوت ہے،علامہ عارف

لاہور ( وقائع نگار)شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے کوئٹہ میں انور علی شہید فرزند حاجی غلام علی مرحوم اور شیعہ علماء کونسل کے مرکزی بزرگ رہنما حاجی حسین علی وفائی کے بھتیجے سمیت دیگرافرادکے قتل کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ٹارگٹ کلنگ اور دہشت گردی جیسی بزدلانہ کاروائیوں سے ملت تشیع کے حوصلے پست نہیں کئے جاسکتے ۔ بلوچستان کی صوبائی حکومت کی جانب سے امن وامان کے قیام میں موئثراقدامات کے باوجود کوئٹہ کی عوام کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام نظر آتی ہے ،اس لئے کہ آئے روز کی ٹارگٹ کلنگ اور دہشتگردی کے واقعات حکومتی اداروں کی ناقص کارکردگی کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔ ملک بھر میں ایک ہی مائنڈ سیٹ تکفیری گروہ ہے جو ملک کے مختلف شہروں میں دہشتگردی اور ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں ملوث ہے ۔لیکن قانون نافذ کرنے والے اداروں کو تمام تر معلومات ہونے کے باوجود کہ یہ کون لوگ ہیں ؟کہاں سے ٹریننگ حاصل کرتے ہیں ؟ ان کے پیچھے کون ہے ؟ ان کے سہولت کار کون ہیں،اور انہیں فنڈنگ کہاں سے ملتی ہے ؟ پر خاموشی ،قانون نافذ کرنے والے ادروں کی کارکردگی پرسوالیہ نشان ہے۔      علامہ عارف حسین واحدی نے بلوچستان حکومت سے مطالبہ کیا کہ کوئٹہ میں دہشت گردی و ٹارگٹ کلنگ کی روک تھام کے لئے ٹھوس اقدامات کئے جائیں اور ان واقعات میں ملوث افراد سمیت ان واقعات کے پس پردہ حقائق کو بھی منظر عام پر لایا جائے ۔ علامہ عارف حسین واحدی نے کہا کہ ٹارگٹ کلرز و دہشتگردوں کے خلاف آپریشن کے دائرہ کار وسیع کیا جائے ۔ انور علی و دیگر شہداء کے قاتلوں کو فی الفور گرفتار کرکے قانوں کے کٹہرے میں لایا جائے ۔ آخر میں انہوں نے شہدا ء کوئٹہ کے لواحقین سے دلی اہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے شہداء کی بلندی درجات کیلئے دعا فرمائی

مزید : میٹروپولیٹن 4