چینی شخص کا انوکھا اقدام،خود کو شہد کی مکھیوں کے انسانی چھتے میں بدل لیا

چینی شخص کا انوکھا اقدام،خود کو شہد کی مکھیوں کے انسانی چھتے میں بدل لیا
 چینی شخص کا انوکھا اقدام،خود کو شہد کی مکھیوں کے انسانی چھتے میں بدل لیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

بیجنگ (نیوز ڈیسک) چینی لوگ جب مہم جوئی پر اتر آئیں تو ایسے ایسے کام کرجاتے ہیں کہ دنیا حیران رہ جاتی ہے۔ شان ڈونگ صوبے کے شہر تانان میں بھی ایک چینی شخص نے ورلڈ ریکارڈ بنانے کے لئے ایک ایسا کام کیا کہ جس کا سوچ کر بھی انسان خوفزدہ ہوجاتا ہے۔ گاؤ بنگو نامی اس شخص نے اپنے جسم پر 109کلوگرام سے زائد وزن کی شہد کی مکھیوں کو جمع کیا اور خود کو شہد کی مکھیوں کے انسانی چھتے میں بدل لیا۔ گاؤ نے یہ کارنامہ سرانجام دیتے وقت محض ایک جانگیہ پہن رکھا تھا اور سر سے پاؤں تک اس کا سارا جسم مکھیوں سے ڈھکا ہوا تھا۔ مہم جو شخص کے جسم پر پہلے شہد ملا گیا اور اس کے اوپر ملکہ مکھیاں انڈیلی گئیں جن کی وجہ سے ہزاروں کی تعداد میں کارکن مکھیاں اس کے جسم پر جمع ہونا شروع ہوگئیں۔ گاؤ کی عمر 50 سال سے زائد ہے اور وہ عرصہ 30 سال سے مکھیاں پالنے کا کاروبار کررہے ہیں۔ انہوں نے نیا عالمی ریکارڈ 25 مئی کی صبح کو بنایا۔ اس کوشش کے دوران ان کے جسم پر مکھیوں نے تقریباً 2000 ڈنگ مارے اور ریکارڈ قائم ہوتے ہی انہوں نے گرم پانی کے تالاب میں چھلانگ لگادی۔

مزید : علاقائی