عرب ریاست کا وہ فیصلہ جو مقیم غیر ملکیوں پر بجلی بن کر گرگیا،بڑی مشکل کھڑی ہوگئی

عرب ریاست کا وہ فیصلہ جو مقیم غیر ملکیوں پر بجلی بن کر گرگیا،بڑی مشکل کھڑی ...
عرب ریاست کا وہ فیصلہ جو مقیم غیر ملکیوں پر بجلی بن کر گرگیا،بڑی مشکل کھڑی ہوگئی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

منامہ (نیوز ڈیسک) بحرین کی حکومت نے ایک سخت فیصلہ کرتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ روزمرہ استعمال کی درجنوں اشیاءاور خدمات پر سرکاری سبسڈی ختم کی جارہی ہے تاکہ یہ رعایت ریاست میں مقیم غیر ملکیوں کی بجائے صرف بحرین کے شہریوں کو دی جاسکے۔

حکومت بحرین کی طرف سے ایندھن، بجلی، پانی، گوشت اور دیگر متعدد اشیاءپر سبسڈی دی جاتی تھی جس سے مقامی اور غیر ملکی افراد مساوی طور پر مستعفی ہوسکتے تھے۔ حکام کا کہنا ہے کہ اس رعایت کا زیادہ تر فائدہ غیر ملکیوںکو ہورہا تھا جس کی وجہ سے اسے ختم کیا جارہا ہے اور اب بحرین کے شہریوں کو حکومتی امداد کے طور پر نقد رقم ادا کی جائے گی جبکہ غیر ملکیوں کے لئے اس طرح کی کوئی سہولت دستیاب نہ ہوگی۔

بحرین میں تقریباً 13 لاکھ غیر ملکی مقیم ہیں جو کہ اس کی کل آبادی کا تقریباً نصف بنتے ہیں اور اس فیصلے سے پہلے وہ بھی بحرینی عوام کی طرح حکومتی سبسڈی سے استفادہ کررہے تھے۔ اطلاعات کے مطابق ابتدائی طور پر گوشت پر دی جانے والی سبسڈی ختم کی جاسکتی ہے جو کہ تقریباً ساڑھے چار کروڑ دینار سالانہ ہے، لیکن اس کے بعد بجلی اور پانی کی سبسڈی بھی ختم کردی جائے گی جو کہ دیگر اشیاءپر دی جانے والی سبسڈی سے کہیں زیادہ ہے۔ اس فیصلے کے نتیجہ میں اشیاءکی قیمتوں میں نمایاں اضافہ ہوجائے گا اور اس کے اثرات صرف غیر ملکی شہریوں پر مرتب ہوں گے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس