سپریم کورٹ میں ای کورٹ کے پہلے مقدمے کافیصلہ ، قتل کیس کے ملزم کی درخواست ضمانت قبل ازگرفتاری منظور

سپریم کورٹ میں ای کورٹ کے پہلے مقدمے کافیصلہ ، قتل کیس کے ملزم کی درخواست ...
سپریم کورٹ میں ای کورٹ کے پہلے مقدمے کافیصلہ ، قتل کیس کے ملزم کی درخواست ضمانت قبل ازگرفتاری منظور

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے ای کورٹ کے پہلے مقدمے کا فیصلہ سنا دیا ،عدالت نے قتل کیس کے ملزم کی درخواست ضمانت قبل ازگرفتاری منظورکرلی۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں بنچ نے قتل کیس کے ملزم کی درخواست ضمانت قبل ازگرفتاری کی ای کورٹ سماعت کی،عدالت نے کہا کہ ملزم نورمحمدکیخلاف 2014 میں قتل کامقدمہ درج ہوا،عینی شاہدین کے مطابق نامعلوم افرادنے قتل کیا،وکیل درخواستگزار نے کہا کہ پولیس نے بدنیتی کامظاہرہ کیا،نامزدملزمان واقعہ میں ملوث نہیں۔

سندھ ہائیکورٹ کی جانب سے فیصلے میں تاخیرپرچیف جسٹس نے نوٹس لے لیا،چیف جسٹس نے کہا کہ 2014 میں وقوعہ ہوا،ٹرائل کورٹ نے 2016 میں ضمانت خارج کی، سندھ ہائیکورٹ نے 2016 سے 2019 تک فیصلہ نہیں کیا،عدالت نے کہاکہ اس طرح کے معاملات ججزکے کوڈآف کنڈکٹ کیخلاف ہیں،عدالت نے سیکرٹری سپریم جوڈیشل کونسل کوفیصلے کی کاپی حاصل کرنےکی ہدایت کردی اورسندھ ہائیکورٹ کے فیصلوں سے متعلق رپورٹ 2 ہفتے میں طلب کرلی،عدالت نے ملزم کی درخواست ضمانت قبل ازگرفتاری منظورکرلی۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /اسلام آباد