سپریم کورٹ،اقدام قتل کے ملزمان کی درخواست ضمانت قبل ازگرفتاری منظوری

سپریم کورٹ،اقدام قتل کے ملزمان کی درخواست ضمانت قبل ازگرفتاری منظوری
سپریم کورٹ،اقدام قتل کے ملزمان کی درخواست ضمانت قبل ازگرفتاری منظوری

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستا ن نے اقدام قتل کے ملزمان کی قبل ازگرفتاری کی درخواستیں منظورکرلیں،عدالت نے ریمارکس دیئے ہیں کہ جب کسی نے کچھ دیکھانہیں تواب گرفتاری کاکیا فائدہ ؟

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں بنچ نے اقدام قتل کے ملزمان کی درخواست ضمانت قبل ازگرفتاری پر سماعت کی ،چیف جسٹس کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے ملزمان حفیظ احمد،امجدعلی اورعرفان احمدکی درخواست پر سماعت کی ،ملزمان کےخلاف تھانہ روہڑی میں مقدمہ درج تھا ،دوران سماعت چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ جب کسی نے کچھ دیکھانہیں تواب گرفتاری کاکیا فائدہ ؟،ایف آئی آر بھی 6 روزبعد درج کرائی گئی،چیف جسٹس نے استفسار کیاکہ کیاپوسٹ مارٹم میں موت کی وجہ سامنے آئی؟وکیل ملزم نے کہا کہ پوسٹ مارٹم میں بھی موت کی وجہ نہیں بتائی گئی،عدالت نے کہا کہ میڈیکل رپورٹ میں بھی موت کی وجہ سامنے نہیں آئی۔عدالت نے تینوں ملزمان کی ضمانت کی درخواست منظورکرلی۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد