پاکستان میں آن لائن سیل میں تیزی سے اضافہ

پاکستان میں آن لائن سیل میں تیزی سے اضافہ

  

بیجنگ (اے پی پی) پاکستان میں آن لائن سیل کے شعبے میں حالیہ سالوں کے دوران نمایاں اضافہ ہوا، یہاں آن لائن سیل اور لاجسٹکس سروسز کے فروغ سے 8 لاکھ کے قریب روزگار کے مزید مواقع پیداکیے جاسکتے ہیں۔یہ بات چینی یونیورسٹی کے پروفیسر اور ماہر قانون چینگ شی زانگ نے کہی۔انھوں نے کہا کہ پاکستان میں آن لائن سیل کے نظام کو فروغ مل رہا ہے جبکہ کورونا لاک ڈاؤن سے روایتی طریقہ فروخت سخت متاثر ہوا، ان کا کہنا تھا کہ اگر ملک میں آن لائن سیل اور لاجسٹک سروسز کے شعبوں کو فروغ دیا جائے تو روزگار کے مزید 7 لاکھ 80 ہزار سے زیادہ مواقع پیداکیے جاسکتے ہیں جبکہ مستقبل قریب میں اس شعبے کے ملازمین کی تعداد میں 15 لاکھ 60 ہزار تک افراد کا اضافہ بھی ہوسکتا ہے۔ماہر قانون نے کہا کہ دنیا میں چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری ادارے کورونا وائرس کے باعث مشکلات کا شکار ہیں تاہم کئی آن لائن سیل کے پلیٹ فارمز سے انھیں کچھ نئے مواقع بھی ملے ہیں اور کپڑے، جوتوں،ہیٹ، الیکٹرانکس اور فروزن فوڈ سے متعلقہ کاروباری اداروں نے آن لائن سیل کا سلسلہ شروع کردیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ای کامرس کی ترقی کے لیے کم از کم دوصنعتی شعبوں کی معاونت درکار ہے جن میں موبائل کمیونیکیشن ٹیکنالوجی اور لاجسٹک سروس شامل ہیں،پاکستان میں یہ شعبہ تیزی سے فروغ پارہا ہے لیکن موبائل کمیونیکیشن اور لاجسٹک سروس کا مسئلہ ہے کیونکہ کچھ دیہی علاقے ایسے بھی ہوسکتے ہیں جہاں موبائل فون کی سہولت نہ ہو، اسی طرح کچھ پاکستانی ڈیپارٹمنٹل سٹورز سے خریداری اور نقد ادائیگی کو پسند کرتے ہیں جسے بطور تفریح بھی لیا جاتا ہے،تاہمکورونا وائرس کی صورتحال میں آن لائن خریداری ہی بہتر ی ہے اور لاجسٹک سروس کے فروغ سے بڑے پیمانے پر روزگار کے مواقع پیدا ہوسکتے ہیں۔

مزید :

کامرس -