حکومت ملتی نیشنل کمپنیوں کے ایماء پر تمباکو کو فصل پر ٹیکس لگانا چاہتی ہے: کاشتکاران

  حکومت ملتی نیشنل کمپنیوں کے ایماء پر تمباکو کو فصل پر ٹیکس لگانا چاہتی ہے: ...

  

تخت بھائی (احمد زادہ)کاشتکاروں اورصنعتی مزدوریونینز کا مردان میں اجلاس ہوا جس میں فیصلہ ہوا کہ حکومت ملٹی نیشنل کمپنیوں کی ایماء پر تمباکو فصل پر ٹیکس لگانے کی کوشش کر رہی ہے۔ جوکہ غریب کاشتکاروں کے ساتھ ظلم ہے جس سے لاکھوں کاشتکار اور تقریباً 20 ہزار صنعتی مزدور بے روزگار ہو جائیں گے صوبائی صدر محنت کش لیبر فیڈریشن ابراراللہ، بچھلے سال 300 روپے فی کلو ایڈوانس ٹیکس لگایا گیا تھا جس پر کاشتکاروں اور صنعتی مزدوروں نے احتجاج اور مظاہرے کئے۔ اسد قیصر سپیکر قومی اسمبلی کی مہربانی سے تحریک انصاف حکومت نے کاشتکاروں اور صنعتی مزدوروں کی فریاد سُن کر ٹیکس ختم کیا جس پر تمام کاشتکاروں اور صنعتی مزدوروں نے تحریک انصاف حکومت کا شکریہ ادا کیا۔ لیکن سال 2020 کے لئے ملٹی نیشنل کمپنیاں کوشش کر رہی ہے کہ کسی طرح حکومت ان کاشتکاروں کے تمباکو پر بڑا ٹیکس لگائیں اور جو چھوٹے فیکٹریاں ہیں یا تمباکو ڈیلر ہیں ان کو ختم کیا جائے اور تمباکو مارکیٹ میں ملٹی نیشنل کمپنیوں کی اجارہ داری قائم ہو سکیں۔ کاشتکاروں اور صنعتی مزدوروں کا مطالبہ ہے کہ 10 روپے فی کلو گرام تمباکو ٹیکس کے علاوہ کوئی بھی ٹیکس ہمیں منظور نہیں۔ اور اگر حکومت ٹیکس لگانا چاہتی ہے تو سیگریٹ کی ڈبی پر لگائیں۔ کاشتکاروں یا صنعتی مزدوروں کے منہ سے نوالہ نہ چینا جائے۔ ابراراللہ صدر محنت کش لیبر فیڈریشن، رضوان اللہ صدر کسان بورڈ، حاجی عبدالنبی صدر سرحد ایگریکلچرل آینڈ رورل ڈیولپمنٹ ارگنائزیشن، حاجی نعمت شاہ صدر انجمن تحفظ کاشتکاران اور لیاقت یوسفزئی صدر تحفظ حقوق کاشتکاران مزدور کسان کواڈینیٹرمحمد اقبال۔ نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ خیبر پختون خواہ میں بہت زیادہ غربت ہے اور بے روزگاری عام ہے لہٰذا تمباکو کے فصل کو تحفظ دیا جائے نہ کہ ان پر بے تحاشہ ٹیکس لگائیں جائے۔ہم تما م عہدیدار تحریک انصاف حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ کاشتکاروں اور صنعتی مزدوروں کے حال پر رحم کریں اور تمباکو صنعت کو بچایا جائے۔

منشیات سمگلر گرفتار، بھاری مقدار میں منشیات برآمد

پشاور(کرائم رپورٹر) کپیٹل سٹی پولیس پشاور نے خفیہ اطلاع پر کارروائی کے دوران بھاری مقدار میں منشیات سمگل کرنے کی کوشش ناکام بناتے ہوئے ایک ملزم کو گرفتار کر لیا، گرفتار منشیات سمگلر موٹر کار کے ذریعے منشیات سمگل کرنے کی کوشش کر رہا تھا جس کے قبضے سے 30 کلو گرام چرس اور 10 کلو گرام ہیروئن برآمد کرنے کے ساتھ ساتھ جعلی سروس کارڈز اور جعلی نمبر پلیٹس بھی برآمد کئے گئے ہیں، گرفتار ملزم کا تعلق جمرود سے ہے جس نے ابتدائی تفتیش کے دوران منشیات پنجاب سمگل کرنے جبکہ جعلی سروس کارڈز اور نمبر پلیٹس پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں کو دھوکہ دینے کے لئے استعمال کرنے کا انکشاف کیا ہے جس کے خلاف مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کر دی گئی ہے تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز ڈی ایس پی سبرب احتراز خان کو اطلاع ملی تھی کہ منشیات سمگلنگ میں ملوث ملزم کسی بھی وقت منشیات سمگل کرنے کی کوشش کرے گا جس پر ایس ایچ او تھانہ آغا میر جانی شاہ عمران الدین نے رنگ روڈ ناکہ بندی کے دوران ایک مشکوک موٹر کار کو رکنے کا اشارہ کیا جس پر ملزم نے بھاگنے کی کوشش کی، پولیس پارٹی نے گاڑی کا تعاقب شروع کیا جس کو نزدیک ہی قابو کر کے گاڑی کے خفیہ خانوں سے 30 کلو گرام چرس اور 10 کلو گرام اعلی کوالٹی ہیروئن برآمد کرنے کے ساتھ ساتھ مختلف اداروں کے جعلی سروس کارڈز اور جعلی نمبر پلیٹس بھی برآمد کئے گئے، گرفتار ملزم نے ابتدائی تفتیش کے دوران منشیات پنجاب سمگل کرنے کا اعتراف کرتے ہوئے جعلی سروس کارڈز اور نمبر پلیٹس پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں کو دھوکہ دینے کی خاطر استعمال کرنے کا انکشاف کیا ہے جس کے خلاف مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کر دی گئی ہے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -