ماہ صیام ایثار و قربانی کا درس دیتا ہے : مولانا حامد الحق حقانی

  ماہ صیام ایثار و قربانی کا درس دیتا ہے : مولانا حامد الحق حقانی

  

پبی (نما ئندہ پاکستان)جمعیت علماء اسلام کے سربراہ اور دفاع پاکستان کونسل کے چیئرمین اور جامعہ دارالعلوم حقانیہ نائب مہتمم مولانا حامد الحق حقانی نے عید الفطر اکوڑہ خٹک میں منائی۔مولانا حقانی نے مرکزی عیدگاہ میں اپنے خطاب میں کہاکہ رمضان المبارک کے مقدس مہینے نے ہمیں ایثار و قربانی،تزکیہ نفس اور دوسروں کی خبرگیری،اخوت، محبت،اتفاق و اتحاد اور اللہ ورسول صلی اللہ علیہ وسلم کی دی ہوئی تعلیمات قرآن عظیم الشان کو مضبوطی سے تھامے رکھنے کا سبق دیا۔ انہوں نے کہاکہ میرے دادا شیخ الحدیث حضرت مولانا عبدالحق رحمہ اللہ اورمیرے والد شہید شیخ الحدیث حضرت مولانا سمیع الحق رحمہ اللہ ساری عمر دارالعلوم حقانیہ سے دین محمدی? کا پرچار کرتے رہے اوران کی عظیم خدمات آج ملک و قوم اور امت کے سامنے ہیں،وہ ہمیشہ اتفاق واتحاد اور امن کا درس دیتے رہے۔ان کی دی ہوئی تعلیمات پر چل کر اس وقت ملک اور قوم کو بحرانوں سے نکالنے اور ترقی کے راستے پر لے جانے کیلئے پوری قوم کو متفق اور متحد ہونا پڑے گا۔ امت مسلمہ کو باطل اور طاغوتی قوتوں کے مقابلے میں انتہائی محنت اور اتفاق کا مظاہرہ کرنا پڑے گا۔ پاکستان سمیت امت مسلمہ اگر حقیقی اتحاد کرلے تو اس کودنیا کی کوئی طاقت تقسیم در تقسیم نہیں کر سکے گی۔مولانا حامد الحق حقانی نے کہاکہ ہم امید کرتے ہیں کہ افغانستان میں جلد امن قائم ہو،اور طالبان کے مذاکرات کامیابی سے ہمکنار ہوں۔ کشمیر کے مسلمان،بیت المقدس شریف،فلسطین کے مسلمان، شام،برما اور ہندوستان کے مسلمان اسلامی حکومتوں،اوآئی سی،اقوام متحدہ سے انصاف کے منتظر ہیں۔ اگر امت مسلمہ اور اسلامی حکمرانوں،بادشاہوں نے ان مظلوموں کی مدد نہ کی تو تاریخ ہمیں کبھی معاف نہیں کرے گی،عالمی وباء کرونا سے احتیاط اور بچنا بچاناایک صحت مند قوم کے لئے ضروری ہے، یہ وبابھی عذاب اور امتحان کی ایک صورت ہے،کئی ماہ سے گھروں میں بند کشمیری مسلمانوں کی بدعائیں پوری دنیا پر معیشت کی تنگی اور گھروں میں خودساختہ قید کی صورت میں دنیا کو سامنے نظر آگئی۔ آج مسلمانوں کا خون دنیا بھر میں بہایا جارہا ہے،اسلام اور مسلمان دونوں پرامن ہیں۔ لیکن سپر طاقتیں انہیں اپنے گھروں اور اپنے ملکوں میں جینے نہیں دے رہیں۔مولانا حامد الحق نے کہاکہ اس وقت امت مسلمہ کا اولین حذف قبلہ اول بیت المقدس شریف کی آزادی،حرمین شریفین مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ کا تحفظ مظلوم فلسطینی،کشمیری،برما،شام،افغانستان اور ہندوستان کے مسلمانوں سے اظہار یکجہتی جاری رکھنا ہے، بیت المقدس شریف پر دہائیوں سے قابض یہودونصاری مسلمانوں کی غیرت،حمیت،تہذیب و تمدن کو مٹانا چاہتے ہیں، دنیا بھر میں مسلمانوں کو نبی آخرالزمان حضرت محمدمصطفی کی سنت کو اپنا کر خالص اسلامی حکومتوں کا نقشہ بنا کر دنیا کے سامنے اسلام کا خوبصورت اور پرامن دین پیش کرنا ہوگا،خود اسلام کا رول ماڈل بن کر ہر مسلمان دنیا بھر کے تمام مذاہب کے لوگوں کے دل جیت کر ان کی آخرت سنوار سکتے ہیں، دارالعلوم حقانیہ کے مہتمم شیخ الحدیث حضرت مولانا انوار الحق نے اپنے خطاب میں مسلمانوں پر زور دیا کہ رمضان المبارک نے ہمیں اللہ اور رسول کے احکامات پر ہر لمحہ چلنے او ر تجدید عہد سکھادیا۔ دنیا بھر میں کمزور ومظلوم مسلمانوں کو ذلت و پستی سے نکالنا ایک مشترکہ مشن و کاذ ہونا چاہیے، مسلمان حکمرانوں کو دنیا بھر کے مظلوم مسلمانوں کے تحفظ اوران کی داد رسی کے لئے عملی اقدامات اٹھانا ہوں گے۔ مولانا حامد الحق حقانی نے کہاکہ پور ی قوم کراچی طیارہ حادثہ پر افسردہ ہے،ایک بہت بڑانقصان رمضان کے آخری ایام میں ہوا،سینکڑوں گھروں اور خاندانوں میں آج عید کے دن بھی صف ماتم بچھی ہوئی ہے لیکن وہ سب شہید ہیں،ان کے اہل خانہ صبر کا دامن ہاتھ سے نہ چھوڑیں،مولانا حقانی نے طیارہ میں شہید ہونے والے افراد اور دارالعلوم دیوبند کے شیخ الحدیث مولانا سعید احمد پالنپوری،مولانا ڈاکٹر خالد محمود کے لئے دعائے مغفرت بھی کی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -