ہیلتھ منسٹر کی نئی پالیسی: لاہور کے ہسپتال ناتجربہ کار قائم مقام میڈیکل سپرنٹنڈ نٹس کے سپرد: مشیر صحت لاعلم نکلے 

ہیلتھ منسٹر کی نئی پالیسی: لاہور کے ہسپتال ناتجربہ کار قائم مقام میڈیکل ...

  

لاہور (جاوید اقبال)وزارت صحت پنجاب نے لاہور کے تمام ہسپتالوں میں سادہ ایم بی بی ایس ڈاکٹروں کو میڈیکل سپرنٹنڈنٹ کاایکٹنگ چارج دیدیاگیاکسی ایک ہسپتال میں بھی ریگولر بنیادوں پر میڈیکل سپرنٹنڈنٹ تعینات نہیں کیا گیا،ایم بی بی ایس ڈگری کے حامل من پسند ڈاکٹرز کو دو دو ہسپتالوں کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ کا چارج دیدیا گیا۔ رپورٹ کے مطابق لاہور بھر میں ہسپتالوں کے ایکٹنگ میڈیکل سپرنٹنڈنٹس میں سے کسی ایک کے پاس بھی میڈیکل سپرنٹنڈنٹ لگنے کی اہلیت ہے نہ تعلیم اور نہ ہی تجربہ۔پی ایم اے کی جاری کردہ رپورٹ کے مطابق جناح،جنرل،میو ہسپتال،مزنگ ہسپتال،یکی گیٹ ہسپتال،پنجاب ڈینٹل ہسپتال،میاں میر ہسپتال،غازی آباد ہسپتال،لیڈی ولنگڈن،لیڈی ایچیسن ہسپتال،سید مٹھا،میاں منشی،کوٹ خواجہ سعید،سروسز، مینٹل ہسپتال لاہور،پی آئی سی،ٹیچنگ ہسپتال شاہدرہ میں ریگولر بنیادوں پر ایم ایس نہیں لگائے گئے ان ہسپتالوں میں ایکٹنگ چارج دئیے گئے ہیں اور ان ہسپتالوں میں جو ایم ایس لگائے گئے ہیں ان میں اکثریت کے پاس ایم ایس لگانے کیلئے مخصوص ڈگری بھی موجود نہیں ہے،وزیر صحت کی اس پالیسی کے خلاف پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن لاہور نے احتجاجی تحریک چلانے کا اعلان کر دیا ہے اس حوالے سے خصوصی ایشن کے صدر پروفیسر اشرف نظامی ودیگردیگر کا کہنا ہے کہ یہ شرمناک اقدام ہے جو کئی کئی مہینوں اور سالوں سے جاری ہے یہاں پر ایم ایس لگنے کے اہل سینکڑوں ڈاکٹر کوالیفائیڈ موجود ہیں اگر ان کے پاس سفارش نہیں ہے اسی لئے نہ ان کوالیفائیڈ لوگوں کو لاہور جیسے شہر کے ہسپتالوں کا ایم ایس لگایا گیا ہے دوسری طرف مشیر صحت حنیف پتافی سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ معاملے کا علم نہیں ہے تحقیقات کریں گے۔

میڈیکل سپرنٹنڈنٹس

مزید :

صفحہ آخر -