جنرل الیکٹرک اورگلوبل مینوفیکچرنگ کی شراکت داری

  جنرل الیکٹرک اورگلوبل مینوفیکچرنگ کی شراکت داری

  

لاہور(پ ر)جنرل الیکٹرک (GE)  اور گلوبل مینوفیکچرنگ اینڈ انڈسٹریلائزیشن سمٹ (GMIS) نے دبئی سمیت عالمی سطح پراکنامک ری جنریشن اور مینوفیکچرنگ ٹرانفارمیشن میں معاونت کے لیے ڈیجیٹائزیشن کے کردار، لین مینوفیکچرنگ اور کام کی جگہوں پر تحفظ کے لیے  باہمی شراکت داری کا اعلان کردیا۔ GE اور گلوبل مینوفیکچرنگ اینڈ انڈسٹریلائزیشن سمٹ  مینوفیکچررز کو کارکردگی میں بہتری، فضلے کے خاتمے، اخراجات میں کمی، پیداوار اور اپ ٹائم میں اضافے سمیت ملازمین کے اطمینان کے حصول کے لیے ڈیجیٹائزیشن کو اپنانے،لین پراسس اور سیفٹی پروٹو کولزمیں معاونت فراہم کرنے کے لیے باہمی تعاون کریں گے۔   ایکسپو 2020 کے دبئی نمائش سینٹرمیں 22-27 نومبر کو منعقد ہونے والے گلوبل مینوفیکچرنگ اینڈ انڈسٹریلائزیشن سمٹ کا چوتھا ایڈیشن، گلوبل مینوفیکچرنگ اور ٹیکنالوجی کمیونٹی کے سرکردہ افراد کومینوفیکچرنگ اور انڈسٹریلائزیشن کے ممکنہ مستقبل کے لیے ان تین اہم ترین محرکات کے حوالے سے باہمی گفت وشنید اور بحث مباحثہ کے لیے منفرد پلیٹ فارم فراہم کرے گا۔

  GE کی #GMIS2021  کے ساتھ پارٹنرشپ اور مینوفیکچرنگ میں بہتری ومعاشی ترقی کے لیے باہمی تعاون کے حوالے سے مسرت کا اظہار کرتے ہوئے GE کے سینیئر وائس پریذیڈنٹ اور GE International Markets کے صدر و سی ای او نبیل حبیب کا کہنا ہے کہ  GE  مینوفیکچرنگ کے میدان میں 130  سالہ ورثے کا حامل ادارہ ہے جو توانائی، صحت اور ایوی ایشن جیسے شعبوں میں عالمی سطح پر آپریشنز میں مصروف عمل ہے۔  نبیل حبیب کا مزید کہنا تھا کہ GE  اس سمٹ کے موقع پر ڈیجیٹائزیشن کے نفاذ، کم از کم فضلے کے ساتھ پیداوار کے حصول اور سیفٹی کو دی جانیوالی اولین ترجیح  کے حوالے سے اپنے تجربات سے آگاہی کے ساتھ ساتھ ان عوامل کے باعث دیر پا مینوفیکچرنگ کے حوالے سے بھی رہنمائی فراہم کرے گا۔  گلوبل مینوفیکچرنگ اینڈ انڈسٹریلائزیشن سمٹ (GMIS) اقوام متحدہ کے ادارہ برائے صنعتی ترقی (UNIDO)  اور متحدہ عرب امارات کی وزارت صنعت و جدید ٹیکنالوجی کا مشترکہ اقدام ہے جبکہ   #GMIS2021 کا موضوع    "معاشرتی رابطوں کی بحالی: ترقی کے لیے ڈیجیٹائزیشن کا نیا تعارف"  (Rewiring Societies: Repurposing Digitalisation for Prosperity)  رکھا گیا ہے۔گلوبل مینوفیکچرنگ اینڈ انڈسٹریلائزیشن سمٹ کی انتظامی کمیٹی کے سربراہ  بدر العلما ) (Badr Al-Olama نے GE کے ساتھ ہونے والی اس پارٹنر شپ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ عالمی سطح پر صنعتی ترقی  میں انقلاب آفریں ادارے  GE  کے ساتھ پارٹنرشپ انتہائی اہمیت کی حامل ہے۔ GE  کے ساتھ پارٹنرشپ کو عالمی صنعتی ترقی کے لیے اہم قدم قرار دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہایسے وقت میں جب دنیا بھر کے مینوفیکچررز مصنوعی ذہانت (Artificial Intelligence)،  روبوٹکس (Robotics)۔ انٹرنیٹ آف تھنگز (Internet of Things)،  بلاک چین (Blockchain) سمیت دوسری جدید ترین انقلابی ایجادات کی مدد سے صنعتی ترقی کے نئے دور میں داخل ہو رہے ہیں  GE کے ساتھ یہ اشترک نہایت اہمیت کا حامل ہے۔  مینوفیکچرنگ کا تیسرا محرک سیفٹی ہمیشہ سے جی ای کی ترجیحات میں سر فہرست رہا ہے۔ ملازمین کو GEکا اثاثہ قرار دیتے ہوئے نبیل حبیب کا کہنا تھا کہ اپنے ملازمین اور صارفین کی سیفٹی  ہمیشہ سے ہماری بینادی ترجیح رہا ہے۔  ان کا مزید کہنا تھا تھا کہ مسلسل نگرانی، ٹریننگ، ڈیٹا اور ٹریکنگ سمیت دوسرے دستیاب ذرائع کو استعمال کرتے ہوئے سیفٹی کے حوالے سے کیے جانے والے اقدامات نہ صرف ہماری کام کی جگہوں کو محفوظ بنانے میں مدد فراہم کرتے ہیں بلکہ GE کی تمام سرگرمیوں اور اہداف کے حصول کے لیے کاوشوں کو بہتر سے بہترین بنانے میں معاون ثابت ہوتے ہیں۔ 

مزید :

کامرس -