اسرائیل فلسطین پر ناجائز قابض، آئر ش پارلیمنٹ میں تاریخی قرار داد منظور 

اسرائیل فلسطین پر ناجائز قابض، آئر ش پارلیمنٹ میں تاریخی قرار داد منظور 

  

      ڈبلن،مقبوضہ غزہ (این این آئی، مانیٹرنگ ڈیسک) آئر لینڈ کی پارلیمان میں اسرائیل کیخلاف تاریخی تحریک کو منظور کر لیا گیا۔غیر ملکی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق پہلی بار کسی یورپی ملک نے فلسطین پر اسرائیل کے جبری الحاق کو تسلیم کیا، جمہوریہ آئرلینڈ کی پارلیمنٹ نے فلسطین پر اسرائیلی قبضے کی مذمت کی۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق آئرلینڈ پہلا یورپی ملک ہے جس نے اسرائیلی قبضے جیسے الفاظ استعمال کئے، کئی اراکین پارلیمنٹ نے فلسطین کے جھنڈے کا ماسک پہن کر فلسطینیوں سے اظہار یکجہتی کیا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق آئرلینڈ کی پارلیمنٹ میں اسرائیلی سفیر کو نکالنے سے متعلق ترمیمی بل پر بھی ووٹنگ ہوگی، بل پاس ہوا تو اسرائیلی سفیر کو ملک سے نکال کر مزید پابندیاں عائد کی جائیں گی۔اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ اب ہمیں سچ بولنا ہی پڑے گا کہ اسرائیل نے فلسطین کا جبری الحاق کیا ہوا ہے۔ دوسری طرف فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی میں اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں شہید ہونے والے چار فلسطینیوں کے جسد خاکی گذشتہ روز شہری دفاع اور ریسکیو ٹیموں کو ملبے کی صفائی کے دوران ملے ہیں، انہیں سپرد خاک کردیا گیا ہے۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق چاروں فلسطینی مزاحمتی کارکن ہیں۔ انہیں مشرقی غزہ میں ایک سرنگ پر بمباری کیدوران شہید کیا گیا تھا۔ گذشتہ جمعہ سے ان کی تلاش کا عمل جاری تھا۔خیال رہے کہ ریسکیو ٹیموں کو گذشتہ چند روز کے امدادی آپریشن میں 10 فلسطینی شہدا کی لاشیں ملیں ہیں۔ایک فلسطینی شہری گذشتہ سوموار کے روز زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے اسپتال میں دم توڑ گیا تھادوسری طرف مسلم ممالک نے اقوام متحدہ سے اسرائیل اور حماس کے درمیان 11 روزہ کشیدگی کے دوران ممکنہ جرائم کی ذمہ داری عائد کرنے کے لیے تحقیقات کا مطالبہ کردیا۔غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق پاکستان کی جانب سے اسلامی تعاون کونسل(او آئی سی)کے بطور کرآرڈینیٹر اور ریاست فلسطین کی درخواست پر حالیہ کشیدگی پر اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کا خصوصی اجلاس جمعرات کو منعقد ہوگا۔ان ممالک نے مشرقی مقبوضہ بیت المقدس سمیت مقبوضہ فلسطینی علاقوں اور اسرائیل میں 13 اپریل سے ہونے والی انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی تحقیقات کے لیے آزاد بین الاقوامی کمیشن تشکیل دینے کے لیے قرارداد کا مسودہ جمع کرا دیا۔قرارداد کے مسودے میں کہا گیا ہے کہ کمیشن قومیت، نسلی یا مذہبی شناخت کی بنیاد پر منظم امتیاز اور جبر سمیت عدم استحکام اور کشیدگی کی تمام وجوہات کا جائزہ لے۔آزاد ٹیم کشیدگی کے دوران فرانزک مواد سمیت جرائم کے ثبوت اکٹھے کرے گی اور ان کا جائزہ لے گی تاکہ قانونی کارروائی میں اس کو تسلیم کرنے کے امکان کو زیادہ سے زیادہ کیا جاسکے۔

تاریخی قرارداد

مزید :

صفحہ اول -