اردگرد گندگی، سہولت بازاروں میں ”بیماریوں“کی فروخت شروع

اردگرد گندگی، سہولت بازاروں میں ”بیماریوں“کی فروخت شروع

  

 ملتان (  نیوز  رپورٹر  )  ضلعی انتظامیہ کے زیر اہتمام شہر بھر میں لگائے جانیوالے سہولت بازاروں میں سبسڈائز اشیائے خورونوش و ضروریہ کا فقدان اور بازاروں (بقیہ نمبر47صفحہ6پر)

کے اطراف گندگی کے ڈھیر انتظامیہ کی ناقص کارکردگی و غفلت کا منہ بولتا ثبوت ہیں جن میں چینی، گھی اور نہ ہی آٹا دستیاب ہے بلکہ جن دکانداروں کو بالجبر ان سہولت بازاروں میں بٹھایا گیا ہے وہ بھی اپنے نصیبوں کو روتے دکھائی دیتے ہیں ڈبل پھاٹک چوک پر واقع سہولت بازار میں ریلیف نام کو کچھ نہیں ہے اور نہ ہی صارفین ان بازاروں کا رخ کررہے ہیں شہریوں کے مطابق مقامی انتظامیہ نے حکومت پنجاب کو ماموں بنانے کی بھونڈی کوشش قرار دیا ہے جبکہ سہولت بازار میں جبری بٹھائے گئے دکاندار نے بتایا کہ حکومت ان بازاروں میں سبسڈائز چینی آٹا گھی اور آئل فراہم کرے تو ممکن ہے کہ شہریوں کا رجحان سہولت بازاروں کی طرف ہوگا بنا سبسڈائز اشیا خریدنے کوئی نہیں آئے گا اس نے بتایا کہ یہاں سٹال پر صبح سے سہہ پہر تک خریدار نہ ہونے کے برابر ہیں جس کے باعث ہم غریبوں کا نقصان ہورہا ہے۔

فلاپ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -