شیر گڑھ، ملگری استا ذان کا 25فیصد ڈی آر اے الاؤنس کیلئے جدوجہد کا آغاز

   شیر گڑھ، ملگری استا ذان کا 25فیصد ڈی آر اے الاؤنس کیلئے جدوجہد کا آغاز

  

 شیرگڑھ(نامہ نگار) 25فیصدڈی آر اے الاونس کے حصول کے لئے ملگری استاذان ضلع مردان نے طبل جنگ بجا دیا پشاور دھرنے میں بھر پور شرکت  کا اعلان حقوق  مانگنے سے نہیں چھین کے لیں گے آج سرکاری ملازمین اپنے حقوق کے لئے سروں پر کفن باندھ کر گھروں سے نکلیں اور پشاور میں تاریخی دھرنے کو کامیاب بنائے جب تک ڈی آر اے الاونس کا نوٹیفیکیشن جاری نہیں ہوگا دھرنا جاری رہیگا  ان خیالات کا اظہار ملگری استاذان ضلع مردان کے صدر عثمان سنگر نے ملگری استاذان ضلع مردان کے کارکنوں اور عیدیداروں سے اپنے خطاب میں کیا اس موقع پر نیاز علی خان،ادریس تنولی، لیاقت خان  اور دیگر بھی موجود تھے انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت کے جھوٹے وعدوں پر اب یقین نہیں کمر توڑ مہنگائی نے سرکاری ملازمین کی کمر توڑ دی ہے غریب سرکاری ملازمین کے لئے خزانہ خالی ہے  کا نعرہ لگا کر حکومتی اراکین اور اپوزیشن کے لئے ان کی تنخواہوں اور مراعات میں 3سو فیصد اضا فہ کیا جاتا ہے جو ظلم اور نا انصافی ہے ہمارا صبر کا پیمانہ لبریز ہو چکا ہے اب دما دم مست قلندر ہوگا سرکاری ملازمین تیار ہوجائے27مئی کو تمام راستے اور تمام قافلے پشاور کی طرف ہوں گے اب 25فیصد ڈی آر اے الاونس لے کر دم لیں گے انہوں نے کہا کہ پی ٹی ائی کے دور حکو مت میں مہنگائی300فیصد بڑھ گئی ہے حکومت نے اپنے وزراء،سینیٹرز،قومی و صوبائی اسمبلی کے حکومتی اور اپوزیشن اراکین اسمبلی کی تنخواہوں اور مراعات میں 300فیصد اضافہ کیا جبکہ غریب سرکاری ملازمین کے لئے گذشتہ تیں سالوں سے کوئی اضافہ نہیں کیا جس سے سرکاری ملازمین میں تشویش پائی جاتی ہے اور بار بار حکومت سے تنخواہوں میں اضافے کا مطالبہ کیا گیا جس پر مرکزی حکومت نے وفاقی ملازمین کے لئے مارچ سے25فیصد ڈی آر اے الاونس کا نوٹیفیکشن جاری کیا اور صوبوں کو ہدایت کی کہ وہ بھی صوبائی سرکاری ملازمین کے لئے مارچ سے 25فیصد ڈی آر اے الاونس کا نوٹیفیکشن جاری کرکے ملازمین میں پائی جانیوالی بے چینی دور کرے لیکن صوبائی حکومت نے ہر بار وعدوں پر ٹرخایا جس پر صوبائی سرکاری ملازمین نے تنگ آمد بہ جنگ آمد اور27مئی کو طبل جنگ بجا دیا لہذا تمام سرکاری ملازمین 27مئی کو پشاور دھرنے کے لئے تیار ہو جائے اور جب تک نو ٹیفیکیشن جاری نہیں ہوگا دھرنا جاری رہیگا انہوں نے پر زور مطالبہ کیا کہ آئندہ بجٹ میں تمام ایڈ ہاک ریلیف کو بنیادی تنخواہ میں ضم کرکے ملازمین کی تنخواہوں میں مہنگائی کے تناسب سے3سو فیصد اضافہ کیا جائے ورنہ سرکاری ملازمین سڑکوں پر نکلیں گے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -