خیبر، خوگا خیل قوم کے احتجاج کے دوران بائی پا س روڈ میدان جنگ میں تبدیل 

  خیبر، خوگا خیل قوم کے احتجاج کے دوران بائی پا س روڈ میدان جنگ میں تبدیل 

  

 خیبر (بیورورپورٹ) لنڈی کوتل بائی پاس میدان جنگ بنا رہا، پولیس پر پتھراؤ اور پولیس کی جانب سے ہوائی فائرنگ، کئی پولیس اہلکارسمیت،مظاہرین بھی پتھراو سے زخمی،خوگا خیل قوم کا مطالبات کے حق میں اور گرفتار افراد کی رہائی کے لئے احتجاجاً پاک افغان شاہراہ بائی پاس کو بند کرنے سمیت لنڈیکوتل بازار اور طورخم کو بھی بند کر دیا شاہراہ بندش سے افغانستان کو سپلائی بھی معطل رہی بائی پاس پر مظاہرین اور پولیس فورس کے درمیان تلخ کلامی کے بعد جھڑپ ہوئی مظاہرین نے پولیس فورس پر شدیدپتھراو کی پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے ہوائی فائرنگ کی پتھراو سے چھ پولیس اہل کاروں سمیت پانچ مظاہرین بھی پتھر لگنے سے معمولی زخمی ہو گئے اس موقع پر مظاہرین سے خطاب کر تے ہوئے خوگاخیل قوم کے مشران مفتی اعجاز شینواری،معراج الدین شینواری، لطف اللہ شینواری، عبدالرازق شینواری اور دیگر نے کہا کہ گز شتہ روز خوگا خیل قوم کے طورخم پنڈال میں پرامن بیٹھے ہوئے شرکاء پر پولیس اور ایف سی نے کاروائی کرتے ہوئے 35 افراد کو گرفتار کیا تھا اور پنڈال کو اکھاڑ پھینک دیا گیا جو سراسر ظلم اور ناانصافی ہے انہوں نے کہا کہ این ایل سی، ایف بی آر اور کمانڈنٹ اور خوگا خیل قوم کے نو رکنی کمیٹی کے درمیان ایک مسودہ تیار ہوا تھا جس کو ایک ہفتے کے اندر معاہدے کی شکل دینی تھی چار مہینے گزرنے کے باوجود مسودے کو معاہدے کی شکل نہیں دی گئی انہوں نے کہا کہ بار بار این ایل سی اور ایف بی آر کے اعلی حکام کو مذاکرات اور مسودے کو معاہدے کی شکل دینے کیلئے بتایا گیا لیکن ان چارمہینوں میں کچھ نہیں کیا گیا جسکی وجہ سے قوم احتجاج کرنے پر مجبور ہو گئی اور طورخم این ایل سی ٹرمینل پر کا م بند کرا دیا انہوں نے کہا کہ احتجاج اس وقت تک جا ری رہے گی جب تک انکے مطالبات تسلیم نہیں کئے جا تے اور گرفتار افراد کو رہا نہیں کیا جا تا مقررین نے کہا کہ طورخم میں خوگا خیل قوم کے اربوں روپے جائیداد ہیں جس پر این ایل سی نے قبضہ کر ررکھاہے جبکہ این ایل سی معاہدے کی پاسداری نہیں کر رہی بلکہ معاہدے کی خلاف ورزی کر رہی ہے انہوں نے کہا کہ طورخم میں این ایل سی تما م اداروں کے اختیارات استعمال کر رہی ہیں طورخم میں روزگار کو ختم کیا گیا لیبر سے لیکر تا جر تک این ایل سی کے ظلم ویادتی سے تنگ آگئے ہیں بار بار احتجاج کے باجو د کوئی شنوائی نہیں ہو رہی کوئی پوچھنے والا نہیں ہے عوام تنگ آگئے اب عوام این ایل سی کے خلاف گھروں سے نکلیں ہی اور اب قوم کے ساتھ معاہدہ کرنا پڑے گا واضح رہے کہ لنڈی کوتل سول کورٹ کے جج نے ایک درخواست پر گرفتار افراد کو ضمانت پر رہا کردیا

مزید :

پشاورصفحہ آخر -