نوشہرہ، امن و امان کی بد ترین صورتحال، عوام غیر محفوظ 

نوشہرہ، امن و امان کی بد ترین صورتحال، عوام غیر محفوظ 

  

 نوشہرہ(بیورورپورٹ)نوشہرہ میں امن و امان کی بدترین صورتحال اکبر پورہ سے نظامپور تک عوام غیر محفوظ جگہ جگہ پولیس کی غیر قانونی ناکہ بندیوں کے باوجود راہزنیوں اور ڈکیتیوں کی وارداتوں میں بے تحاشہ اضافے سے شہریوں اور تاجروں کی زندگیاں اجیرن ہو گئیں  امن و امان کی بدترین صورتحال کے باعث وزیر اعلی خیبر پختونخواہ محمود خان نے از خود نوٹس لیتے ہوئے تھانہ پبی پر اچانک چھاپہ مار کر پولیس ریکارڈ چیک کیا اور نوشہرہ کی پولیس احکام کی سرزنش کی لیکن اس کے باوجود نوشہرہ پولیس خواب خرگوش کی نیند سو چکی ہے عوام کو پولیس کے نام پر بھتہ وصولی کے ٹیلی فون کالز موصول ہونے کے علاوہ مساجد سے سولرسسٹم کی بیٹریوں کی چوری، موٹرسائیکل کی چوریں کے ساتھ ساتھ کار لفٹینگ کی وارداتیں روز کی معمول بن چکی ہیں جبکہ پولیس نے جگہ جگہ پر غیر قانونی ناکہ بندیاں قائم کر رکھی ہے اور پنجاب جانے اور آنے والے شریف شہریوں کو روک کر جی ٹی روڈ پر کئی کئی گھنٹے زلیل کئے جاتے ہیں نوشہرہ  پولیس نے عوام کو چوروں اور کارلفٹروں کے رحم و کرم پر چھوڑ کر خود جی ٹی روڈ اور موٹروئے پر مال کماو مہم میں مصروف ہو گئے ہیں نوشہرہ کے عوام نے وزیر اعلی خیبر پختونخواہ محمود خان، آئی جی پی سے امن و امان کی بدتر صورتحال پر نوٹس لینے اور اصلاح و احوال کا مطالبہ کر دیا 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -