سندھ میں 18 سال کے نوجوانوں کی لازمی شادی کرانے کا بل جمع

سندھ میں 18 سال کے نوجوانوں کی لازمی شادی کرانے کا بل جمع

  

کراچی(آئی این پی) سندھ میں 18 سال کے نوجوانوں کی لازمی شادی کرانے کا بل جمع کرادیا گیا، جس میں نوجوانوں کی شادی نہ کروانے والے والدین پر500روپے جرمانہ عائد کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق سندھ میں 18 سال کے نوجوانوں کی لازمی شادی کرانے کا بل جمع کرادیا گیا، ایم پی اے ایم ایم اے سید عبدالرشید نے مسودہ قانون اسمبلی سیکریٹریٹ میں جمع کرایا۔ بل 2صفحات پرمشتمل ہیجسیسندھ لازمی شادی ایکٹ 2021 کا نام دیا گیا ہے، بل میں نوجوانوں کی شادی نہ کروانے والیوالدین پر 500روپے جرمانہ عائد کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔ مسودہ قانون میں کہا گیا ہے کہ سندھ حکومت یقینی بنائیکہ والدین اپنیعاقل بچوں کی لازمی شادی کرائیں، اگر والدین تاخیرکرتیہیں تو ڈپٹی کمشنرکوتحریری طورپرآگاہ کرناہوگا۔ ایم پی اے ایم ایم اے سید عبدالرشید کا کہنا ہے کہ معاشریکی فلاح کیلئیقانون تجویزکیاہے۔

 لازمی شادی

مزید :

پشاورصفحہ آخر -