قتل کے جرم میں سزا کاٹنے والا شخص بے گناہ قرار لیکن دراصل زندگی کے کتنے سال سلاخوں کے پیچھے گزار دئیے؟ جان کر آپ کو بھی دکھ ہوگا

قتل کے جرم میں سزا کاٹنے والا شخص بے گناہ قرار لیکن دراصل زندگی کے کتنے سال ...
قتل کے جرم میں سزا کاٹنے والا شخص بے گناہ قرار لیکن دراصل زندگی کے کتنے سال سلاخوں کے پیچھے گزار دئیے؟ جان کر آپ کو بھی دکھ ہوگا

  

نیویارک( مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ میں قتل کے جرم میں 32سال قید کی سزا کاٹنے والے آدمی کو بالآخر بے گناہ قرار دے دیا گیا۔ڈیلی سٹار کے مطابق امریکی ریاست مشی گن کے شہر ڈیٹرائٹ کے رہائشی اس بدقسمت شخص کا نام جلبرٹ پول جونیئر ہے جسے ایک آدمی کو خنجر کے وار کرکے قتل کرنے کے جرم میں قید کی سزا سنائی گئی تھی تاہم وہ ہمیشہ اس الزام کی تردید کرتارہا۔ جلبرٹ کے وکلاءنے ایک بار پھر اس کی سزا کے خلاف عدالت سے رجوع کر رکھا تھا۔ 

اس اپیل کی سماعت میں حکام نے بھی بالآخر تسلیم کر لیا کہ جلبرٹ کو غلط ثبوت کی بناءپر سزا سنائی گئی تھی۔ حکام کے اس اعتراف پر عدالت کی طرف سے جلبرٹ پرعائد الزام مسترد کرتے ہوئے اسے جیل سے رہا کرنے کا حکم دے دیا۔ اس عدالتی فیصلے کے چند گھنٹے بعد جلبرٹ کو جیکسن کی جیل سے رہا کر دیا گیا۔

 56سالہ جلبرٹ نے رہائی کے بعد بتایا کہ ”میں نے یہ تین دہائی سے زائد عرصہ جیل میں لاءپڑھنے اور سیکھنے میں گزارا۔ میں اس تمام عرصے میں یہ معلوم کرنے کی کوشش کرتا رہا کہ کون سا قانون ہے جس کے ذریعے میں اس غلط الزام سے بری ہو سکتا ہوں۔تاہم میری بریت کی راہ اس وقت ہموار ہوئی جب میں نے خدا کے سامنے سرنڈر کر دیا اور پھر اسی نے یہ راستہ نکالا کہ آج میں آزاد کھڑا ہوں۔“

مزید :

بین الاقوامی -