کشمیر اور فلسطین میں بچے اسلام دشمنوں کی گولی سے مرتے ہیں لیکن۔۔۔مصطفی کمال نے سندھ حکومت کو شرمسار کردیا 

کشمیر اور فلسطین میں بچے اسلام دشمنوں کی گولی سے مرتے ہیں لیکن۔۔۔مصطفی کمال ...
کشمیر اور فلسطین میں بچے اسلام دشمنوں کی گولی سے مرتے ہیں لیکن۔۔۔مصطفی کمال نے سندھ حکومت کو شرمسار کردیا 

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)پاک سر زمین پارٹی(پی ایس پی)کے سربراہ  سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ کشمیر اور فلسطین میں بچے اسلام دشمنوں کی گولی سے مرتے ہیں جبکہ سندھ میں کتوں کے کاٹنے سے مرتے ہیں،کراچی کے ساتھ پیپلز پارٹی بدترین لسانی تعصب جاری رکھے ہوئے ہے، کورونا کے نام پر تاجروں کو بے دردی سے لوٹا جا رہا ہے۔

پارٹی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سید مصطفی کمال کا کہنا تھا کہ لاک ڈاؤن کے نام پر پیپلز پارٹی کی متعصبانہ حکومت نے وبا کا فائدہ اٹھاتے ہوئے شہری علاقوں پر دھاوا بول کر کاروباری حضرات کو تنگ کر رکھا ہے اور شہریوں کو مینڈیٹ نہ دینے کی سزا دی جا رہی ہے، سرکاری افسران دوکانداروں کو اٹھا کر بند کرتے ہیں اور پھر بھتا لیکر چھوڑ دیا جاتا ہے،روزانہ کروڑوں روپے اس مد میں کمائے جارہے ہیں،پولیس اور دیگر افسران کی چاندی ہو گئی ہے،وفاقی حکومت خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے کیونکہ عمران خان کی حکومت کو پیپلز پارٹی کےپاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ(پی ڈی ایم) سے مل جانے پر خطرہ ہے،اس لیے پیپلز پارٹی کو کھلی چھٹی دے دی گئی ہے، عمران خان اب پیپلز پارٹی پر بات بھی نہیں کرتے جو منافقت ہے، تحریک انصاف کی حکومت عوامی مسائل کو حل کرنے کے نعرے لگا کر معرض وجود میں آئی تھی لیکن اب پیپلز پارٹی کی مرہون منت چل رہی ہے جو وفاقی حکومت کو چلانے کا تاوان وصول کر رہی ہے۔

انہوں نےکہا کہ کشمیر کا مسئلہ 70 سالوں سے متنازع رکھا گیا کیونکہ متنازع رہے گا تو حل ہوگا لیکن یہاں متنازع مردم شماری کو قانونی قرار دے کر شہریوں کی نسل کشی کر دی گئی، آئندہ ہونے والی تمام مردم شماریاں اسی 2017 کی مردم شماری کی بنیاد پر کی جائیں گی۔ سابق ناظم کراچی نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے سولہ سالہ دور اقتدار میں ایک قطرہ پانی کا اضافہ نہیں کیا گیا، پانی کی بوند بوند کو شہری ترس رہے ہیں،شہر میں ٹرانسپورٹ کی ایک نئی بس نہیں ہے، سندھ میں ظالمانہ کوٹہ سسٹم رائج ہے، 40 فیصد شہری کوٹے پر بھی جعلی ڈومیسائل بنوا کر حق مارا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ یو ٹرن خان سے کسی چیز کی امید نہیں جنہیں دوست اور دشمن کی تمیز نہیں، ہم نے ہمیشہ انکی غیر مشروط حمایت کی لیکن اب ان کے غلط کاموں پر خاموش نہیں رہیں گے۔ سندھ کی مقدوش صورتحال میں کسی سیاست دان سے تو امید نہیں رکھتا لیکن پاکستان کے آرمی چیف جنرل قمر باجوہ سے درخواست کرتا ہوں اس سارے معاملے میں مداخلت کریں اور سندھ کی صورتحال پر ایکشن لیں، شہری سندھ کی عوام کے ساتھ جاری متعصبانہ رویہ قومی سلامتی کا سنگین مسئلہ ہے، عوام میں لاوا پک رہا ہے، جب شہر میں برساتی نالوں کے معاملے پر آرمی چیف کراچی آگئے تھے تو سندھ کی بدامنی پر کیوں نہیں آسکتے اس پر کسی کو اعتراض نہیں ہونا چاہیے۔ مسائل کے حل میں اپنا کردار ادا کریں۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -