جنوبی کوریا میں دہشت گرد گروپ کی مالی معاونت کے جرم میں غیر ملکی کو قید کی سزا

جنوبی کوریا میں دہشت گرد گروپ کی مالی معاونت کے جرم میں غیر ملکی کو قید کی سزا
جنوبی کوریا میں دہشت گرد گروپ کی مالی معاونت کے جرم میں غیر ملکی کو قید کی سزا

  

سیول (رضا شاہ) روسی شہریت کے ایک غیر قانونی طور پر کوریا میں مقیم باشندے جس نے شام میں مقیم دہشت گرد گروپ کو 8.2 ملین کورین وان ($6,500) بھیجے تھے کو 1سال 6 ماہ قید کی سزا سنا دی گئی ہے۔ عدالت نے جرمانے کے طور پر اتنی ہی رقم واپس کرنے کا حکم بھی دیا ہے۔ سیول سنٹرل ڈسٹرکٹ کورٹ نے دہشت گردی کی مالی معاونت اور بڑے پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کے پھیلاؤ پر پابندی کے قانون کی بنیاد پر روسی شہری کے خلاف فیصلہ سنایا۔ یہ فرد، جس کا نام ظاہر نہیں کیا گیا 2018 سے کوریا میں مقیم تھا اور اس نے اقوام متحدہ کی طرف سے نامزد دہشت گرد تنظیم، توحید و جہاد (JTJ) کو ایک شخص کے ذریعے فنڈ فراہم کیا تھا جس سے اس شخص کی کوریا میں ملاقات ہوئی تھی۔ یہ گروپ مارچ 2011 میں شام میں خانہ جنگی کے بعد قائم کیا گیا تھا اور اس کے ارکان زیادہ تر وسطی ایشیائی باشندوں پر مشتمل ہیں۔ نومبر 2020 کے آغاز سےاس شخص نے کل 8.2 ملین کورین وان کی مجموعی رقم  18مرتبہ بیرون ملک بھیجٰیں۔ رقوم ایک غیر ملکی اکاؤنٹ میں بھیجی گئیں جو گروپ کے ایک رکن نے فراہم کیا تھا جو سوشل میڈیا کے ذریعے فنڈز اکٹھے کرتا تھا۔ کیس کے انچارج ہیڈ جج نے فیصلے کے وقت بتایا کہ جرم اس لحاظ سے سنگین ہے کہ مجرم اس بات سے واقف تھا کہ وہ کس قسم کے گروپ کی معاونت کر رہا ہے کیونکہ یہ گروپ خودکش بم دھماکوں اور دیگر حملوں کا ذمہ دار ہے جس میں لوگوں کی ہلاکتیں ہوئیں اور مجرم نے اپنے جرم کا اعتراف بھی کیا ہے اور کہا کہ وہ اپنے کیے پر پشیمان ہے۔ جج نے مذید کہا کہ یہ خیال کیا جاتا ہے کہ مجرم ان مسلمانوں کی مدد کرنے کی کوشش کر رہا تھا جو غریبی اور دکھی حالات میں زندگی گزار رہے ہیں اور اس نے گروپ کو رقم بھیجنے کے ان کے مقاصد کے پیچھے ایک کردار ادا کیا۔ جج نے کہا کہ مجرم کا کوئی سابقہ مجرمانہ ریکارڈ نہیں ہے اور اس کے خاندان کے افراد کرغزستان میں مقیم ہیں جن کی یہ مالی مدد کرتا ہے۔ جج نے کہا کہ عدالت نے ان تمام چیزوں کو مدِ نظر رکھتے ہوئےاِس کے خلاف فیصلہ سنایا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -