بابراعظم نے آئی سی سی سے مطالبہ کر دیا 

بابراعظم نے آئی سی سی سے مطالبہ کر دیا 
بابراعظم نے آئی سی سی سے مطالبہ کر دیا 

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان بابراعظم نے آئی سی سی سے مطالبہ کیاہے کہ اب کورونا کے بعد کی صورتحال کا جائزہ لیا جائے ۔

نجی ٹی وی جیونیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے بابراعظم کا کہناتھا کہ کورونا کے دوران خاص طور پر بالروں نے چیلنجنگ صورتحال کا سامنا کیاہے اب چونکہ صورتحال پہلے جیسی نہیں رہی ، بیک ٹو نارمل ہے تو ایسے میں کورونا کی وجہ سے بنائی جانے والی پالیسی کا ازسر نو جائزہ لینا چاہیے ۔

ان کا کہناتھا کہ کوشش ہے کہ اب چیزیں نارمل ہونا شروع ہو گئی ہیں، کورونا کی وجہ سے کئی چیلنجز کا سامنا رہا ، اب ہمیں جائزہ لینا چاہیے کہ ہم نے کورونا میں کیسے وقت گزارا ، کیسی کرکٹ ہوئی اور اب جو آگے وقت آ رہاہے وہ ہم نے کیسے گزارناہے ، ہر ملک میں مختلف صورتحال کا سامنا تھا کیونکہ ہر ملک کے کورونا کے حوالے سے اپنی الگ الگ پالیسی تھی اور ان پالیسیز کو فالو کرنا پڑتا تھا ہر ملک میں ایک الگ چیلنج تھا ۔

بابراعظم کا کہناتھا کہ جیسے ہم نے نیوزی لینڈ میں 14 دن کا قرنطینہ کیا ، ویسٹ انڈیز میں ایک ہفتے کا قرنطینہ تھا ، جبکہ انگلینڈ میں پانچ روز کا قرنطینہ تھا، اس دوران قوانین بھی الگ الگ تھے ، نیوزی لینڈ کو ویڈ پازیٹو کیسز بھی آ گئے ، ویسٹ انڈیز میں بھی آئے ، یہ صورتحال آسان نہیں تھی لیکن اس دوران کھلاڑیوں کو کریڈٹ جاتاہے جنہوں نے 100 فیصد دینے کی کوشش کی اور کو گرنے نہیں دیا ۔

بابرنے کہا کہ کپتان ہونے کی حیثیت اور بیٹر ہونے کے ناطے سے یہ کہنے میں عار محسوس نہیں کروں گا کہ کورونا کے دنوں میں سب سے زیادہ بولرز کو کریڈت جاتاہے ، انہوں نے اپنے حق میں قوانین نہ ہونے کے باوجود صورتحال کا سامنا کیا ہے ، بال کو چمکانے کیلئے تھوک کی ضرورت پڑتی ہے ، اس سے بال سوئنگ ہوتی ہے لیکن وہ تھوک نہیں لگا سکتے تھے ، پسینے سے گیند اس طرح نہیں چمکتی جس طرح تھوک سے لگانے سے چمکتی ہے ۔

مزید :

کھیل -